سینٹ: وزیراعظم کی استدعا پر دیوالی کے باعث اجلاس 10 منٹ بعد ملتوی

سینٹ: وزیراعظم کی استدعا پر دیوالی کے  باعث اجلاس 10 منٹ  بعد ملتوی

اسلام آباد(آن لائن) ایوان بالا کا اجلاس دیوالی کے تہوار کے باعث ملتوی کردیاگیا، کارروائی صرف 10 منٹ چلائی گئی، راجہ ظفر الحق نے استدعا کی کہ ہندو برادری کی خوشیوں میں شرکت کیلئے وزیراعظم میاں نوازشریف نے اجلاس ملتوی کرنے کی استدعا کی ہے جس پر ڈپٹی چیئرمین سینیٹر صابر بلوچ نے اجلاس کی کارروائی کو معطل کرتے ہوئے پیر کی سہ پہر 3 بجے تک ملتوی کردیا۔ جمعہ کے روز ایوان بالا کا اجلاس ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سینیٹر صابر بلوچ کی زیر صدارت تلاوت کلام پاک سے شروع ہوا۔ جس کے  بعد قائد ایوان سینٹ سینیٹر راجہ ظفر الحق اپنی نشست پر کھڑے ہوئے اور ایوان کی توجہ ہندو برادری کے تہوار دیوالی کی جانب مبذول کراتے ہوئے کہاکہ دیوالی ہندو برادری کا مذہبی تہوار ہے اور اظہار یکجہتی کیلئے وزیراعظم میاں نوازشریف نے استدعا کی ہے کہ اجلاس کو ہندو برادری سے یکجہتی کے اظہار کیلئے ملتوی کیا جائے اور ان کی خوشیوں میں شریک ہوا جائے جس پر ڈپٹی سپیکر سینیٹر صابر بلوچ نے کہاکہ وقفہ سوالات سمیت ایوان کی باقی کارروائی معطل کی جاتی ہے جس کے بعد اجلاس کو پیر کی سہ پہر 3بجے تک ملتوی کردیا۔اسلام آباد سے نمائندہ خصوصی کے مطابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے دیوالی کے موقع پر پارلیمنٹ کے ہندو ارکان کو مبارکباد دی ہے۔ وزیراعظم کی طرف سے تمام ہندو ارکان پارلیمنٹ کو گلدستے، کیک اور کارڈ بھیجے گئے۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہندو برادری پاکستان کیلئے اثاثہ ہے۔ملکی تاریخ میں پہلی بار پاکستان میں سندھ کی صوبائی حکومت نے دیوالی کے موقع پر سرکاری چھٹی کا اعلان کیا اور ہر ہندو ایم این اے کو دیوالی کے تحائف تقسیم کرنے کیلئے 10لاکھ روپے کا پیکج دیا۔