مسیحی برادری کا اسلام آباد مےں مظاہرہ، آج یوم سیاہ منائینگے: کامران مائیکل

لاہور + اسلام آباد (خبرنگار خصوصی + خبرنگار + ریڈیو نیوز) مسیحی برادری نے قرآن پاک کی بے حرمتی کےخلاف اسلام آباد مےں مظاہرہ کیا اور ملعون پادری ٹیری جونز کے پتلے کو نذرآتش کیا گیا۔ اس موقع پر بشپ ایونڈ نے کہا کہ قرآن پاک کی بے حرمتی سازش ہے ٹیری جونز کا فعل انفرادی ہے، پنجاب مےں وزیر اقلیتی امور و انسانی حقوق کامران مائیکل نے کہا ہے کہ نام نہاد پادری ٹیری جونز کے قرآن پاک کی بے حرمتی کے واقعہ کی مذمت کےلئے اقلیتی برادری آج جمعہ کو یوم سوگ کے طور پر منائے گی۔ ارکان اسمبلی مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کےلئے بازوﺅں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر صوبائی اسمبلی کے اجلاس مےں شرکت کرینگے جبکہ ق لیگ کے اقلیتی رکن اسمبلی اکرم مسیح اور دیگر رہنماﺅں فادر جیمز، فادر شاہد معراج، فادر عابد حبیب، ڈاکٹر اکرم جان، فادر فرانس ندیم، فادر اشرف گل، بشپ سلیمان، بشپ زمان انجم، کنول فیروز، ندیم قیصر، جاوید ولیم، تبسم ناز اور دیگر نے لاہور پریس کلب مےں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پادری ٹیری جونز اور پاسٹر وین سپ مسیحی نہیں بلکہ انتہا پسند ہےں، جو مذہب کی آڑ لے کر دنیا کو مذہب کی بنیاد پر لڑانا اور انتشار پیدا کرنا چاہتے ہےں۔ قرآن پاک کی بے حرمتی مذہبی تعصب کی بدترین مثال ہے۔ امریکی حکومت اور اقوام متحدہ اس واقعہ کا سخت نوٹس لے اور واقعہ مےں ملوث پادریوں کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے۔ قرآن پاک کی بے حرمتی کا مسیحی تعلیمات سے کوئی تعلق نہیں، حکومت پاکستان اس معاملے کو امریکہ کے ساتھ سفارتی سطح پر اٹھائے۔ اقوام متحدہ مقدس ہستیوں اور الہامی کتابوں کے احترام کےلئے نیا قانون بنائے۔ اے پی پی کے مطابق ورلڈ مینارٹیز الائنس کے کنوینئر اور سابق وزیر جے سالک نے قرآن پاک کی بے حرمتی کےخلاف بوری کا لباس پہن کر 3گھنٹے تک سر مےں خاک ڈال کر احتجاج ریکارڈ کرایا۔