دہشت گردی کیخلاف مل کر کام کرینگے‘ پاکستان اور روس میں اتفاق‘ پاکستانی اہلکاروں کو تربیت کی روسی پیشکش

دہشت گردی کیخلاف مل کر کام کرینگے‘ پاکستان اور روس میں اتفاق‘ پاکستانی اہلکاروں کو تربیت کی روسی پیشکش

ماسکو+ اسلام آباد(ثناء نیوز) روس نے پاکستان کے ساتھ دہشت گردی کیخلاف ملکر کام کرنے کی تجویز سے اتفاق کرتے ہوئے قانون نافذ کرنیوالے پاکستانی اہلکاروں کی تربیت کی پیشکش کردی ہے۔ روس نے افغانستان سے اتحادی افواج کے انخلاء کے بعد ممکنہ حا لات کے پیش نظر خطے سے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے تمام علاقائی ممالک کیساتھ شانہ بشانہ کام کرنے کی تجویز بھی دی ہے۔ اس امر پر اتفاق اور نئی تجاویز   ماسکو میں سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق اور چیئرپرسن آف فیڈریشن کونسل آف رشیئن فیڈریشن والنٹینا متونکوو سے پارلیمانی  وفد کے ہمراہ ملاقات کے دوران پیش کی گئیں۔ اسلام آباد سے جاری اعلامیہ کے مطابق ملاقات میں پاکستان کی قومی اسمبلی اور کونسل آف رشیئن فیڈریشن تعاون کے فروغ، دوطرفہ تعلقات مستحکم بنانے اوردونوں ممالک کے درمیان اقتصادی و سماجی شعبوں اور باہمی دلچسپی کے دیگر امور پر تبادلہ خیال ہوا۔ سپیکر قومی اسمبلی نے روس کے ساتھ تعلقات کو فروغ دینے کیلئے پارلیمنٹ،موجودہ سیاسی جماعتوں سے اتفاق رائے کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ قومی اسمبلی کے 342 ارکین میں کوئی ایک ممبر ایسا نہیں جو روس کے ساتھ قریبی تعلقات کی حمایت نہ کرتا ہو۔ سپیکر نے دونوں ممالک کے باہمی فائدے کیلئے پاکستان میں روس کی سرمایہ کاری پر زور دیا۔ انہوں نے پاکستان چین راہدری کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان، چین تجارتی راہداری چین کی سرحد سے گوادر تک بنانے کا منصوبہ زیر تکمیل ہے جسے مشرق وسطیٰ اور روس تک بڑھایا جا سکتا ہے۔ سپیکر نے اس امید کا اظہار کیا کہ یہ منصوبہ خطے کے استحکام اور معاشی ترقی میں ایک اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ انہوں نے خطے سے دہشت گردی کے خاتمے اور منشیات کی سمگلنگ کے روک تھام کیلئے دونوں ممالک کے مابین قریبی تعاون کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے منشیات کی سمگلنگ کی روک تھام کیلئے بلائے جانیوالے اجلاس جس میں پاکستان، چین اور افغانستان کے مندوبین نے شرکت کی کا ذکر کرتے ہوئے روس کو بھی اس معاہد ے کا حصہ بننے کی تجویز دی۔ انہوں نے دونوں ممالک میں تجارت کے حجم میں اضافے کیلئے پاکستان کے بڑے شہروں میں روس کی صنعتی اشیاء کی نمائشوں کے انعقاد کی تجویز بھی دی۔ روس کی تاجر برادری کو ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا۔ چیئر پر سن فیڈریشن آف کونسل آف رشین فیڈریشن نے پاکستان میں اپنے دورے کا ذکر کرتے ہوئے پاکستان میں اپنی مہمان نوازی پر حکومت پاکستان کا شکریہ ادا کیا اور سپیکر قومی اسمبلی اور وفد کے دیگر اراکین کا روس کے دورہ کا خیر مقدم کیا۔ انہوں نے سپیکر کی طرف سے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے ملکر کام کرنے کی تجویز سے اتفاق کرتے ہوئے روس کی طرف سے پاکستان کے قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کی تربیت کی پیشکش کی۔ وفد میں چیئر مین، ڈپٹی چیئر مین اور اراکین پارلیمنٹ کے علاوہ تعلیم، سائنس، ثقافت، اطلاعات، بین لاقوامی امور اور فیڈریشن کے بجٹ اور مالیات کے نمائندے شامل تھے۔ پاکستان کی طرف سے ماروی میمن، سید غلام مصطفی شاہ، ڈاکٹر طارق فضل، چوہدری شیخ صلاح الدین، روس میں پاکستان کے سفیر ظہیر احمد جنجوعہ شامل تھے۔