پورٹ قاسم اتھارٹی میں ایک ارب 40کروڑ کی بے ضابطگیوں کا انکشاف

اسلام آباد (آن لائن) مالی سال 2008-09ءکے دوران وزارت بندرگاہیں و جہاز رانی کے ادارے پورٹ قاسم اتھارٹی میں ایک ارب چالیس کروڑ روپے کی مالی بے ضابطگیوں کا انکشاف ہوا ہے مذکورہ مالی سال کی آڈٹ رپورٹ کے مطابق پورٹ قاسم اتھارٹی نے 2008 ءمیں متحدہ عرب امارات کی ایک کمپنی الشایان جنرل ٹریڈنگ کو ویر ہاﺅس کے قیام کیلئے جنوب مغربی صنعتی زون میں بیس ایکڑ کا پلاٹ پچیس لاکھ روپے فی ایکڑ کے حساب سے الاٹ کیا بعد ازاں کمپنی کو اسی زون میں بہتر مقام پر پلاٹ الاٹ کیا گیا جس کی قیمت دو کروڑ پندرہ لاکھ روپے فی ایکڑ تھی مذکورہ کمپنی نے بیس ایکڑ کے پلاٹ کو 6 حصوں میں تقسیم کرکے پراپرٹی ڈیلرز کے ذریعے مارکیٹ ریٹ پر فروخت کر دیا جس سے مڈل مین کو تو فائدہ ہوا تاہم اتھارٹی کو 38 کروڑ روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑا۔ آڈٹ رپورٹ کے مطابق پورٹ قاسم اتھارٹی کی جانب سے مختلف صنعتی زونز میں تین سو پلاٹ الاٹ کئے گئے تاہم الاٹیوں سے پرفرل ڈویلپمنٹ چارجز کی مد میں 95ارب 60 کروڑ روپے کی رقم وصول نہیں کی گئی۔