حکومت مفاہمتی پالیسی جاری رکھے گی، اداروں میں تصادم نہیں ہو گا: بابر اعوان

اسلام آباد (اے پی پی) وفاقی وزیر قانون وانصاف و پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا ہے کہ جمہوری حکومت پانچ سالہ آئینی مدت پوری کرے گی اور کوئی بڑا قومی ایشو ایجنڈے پر نہیں رہنے دے گی، بلوچستان کے عوام کو ملکی تاریخ کا سب سے بڑا پیکج دیا گیا ہے جبکہ ملک ٹوٹنے کی باتیں کرنے والوں کے خواب چکنا چورہوگئے ہیں، اسلام آباد ہائی کورٹ کی بحالی اور میڈیکل کالج کے قیام کا وعدہ پورا کر دیا گیا ہے اس کا جلد افتتاح کرینگے۔ تاجر قانون کرایہ داری کا مسودہ لائیں ایک ماہ میں پارلیمنٹ سے منظور کرلیا جائے گا۔ گذشتہ روز آبپارہ مارکیٹ کے شاہین تاجر اتحاد گروپ کے نومنتخب عہدیداروں کو الیکشن میں کامیابی کی مبارکباد دینے کے موقع پر تاجروں سے خطاب میں وفاقی وزیر نے کہا کہ جمہوری حکومت اپنی 5سالہ آئینی مدت پوری کرے گی کس کو کوئی شوق ہے تو ضمنی انتخابات میں ہمارے امیدواروں سے مقابلہ کرے۔ ڈاکٹر بابر نے کہا کہ حکومت قومی مفاہمتی پالیسی پر کاربند ہے اور اسے جاری رکھے گی اور اداروں میں کوئی تصادم نہیں ہو گا۔ بلوچستان پیکیج لے کر گئے ہیں، 32بار کونسلوں کے اراکین نے وہاں استقبال کیا۔ اب کسی لانگ مارچ کی گنجائش نہیں ہم عوام کے فیصلوں پر یقین رکھتے ہیں اور عوامی عدالت کا سامنا کریں گے۔