آپریشن متاثرین کا کوئی پرسان حال نہیں، فی کس 50 ہزار روپے دیئے جائیں: سراج الحق

آپریشن متاثرین کا کوئی پرسان حال نہیں، فی کس 50 ہزار روپے دیئے جائیں: سراج الحق

لاہور (این این آئی) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے شمالی وزیرستان آپریشن کے متاثرین کے لئے قیام و طعام کا مناسب انتظام نہ کرنے پر وفاقی حکومت سے سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ 5 لاکھ آئی ڈی پیز سخت گرمی میں در بدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں ان کا کوئی پرسان حال نہیں ، شمالی وزیرستان آئی ڈی پیز کو فوری طورپر فی کس 50 ہزار روپے ادا کئے جائیں ، وفاقی حکومت آئی ڈی پیز کو فی خاندان ساڑھے سات ہزار روپے ادا ئیگی کرکے متاثرین کی بے بسی کا مذاق اُڑا رہی ہے، ملک کی داخلہ اور خارجہ پالیسیوں پر نظرثانی کرکے انہیں قومی اُمنگوں اور ملکی مفادات سے ہم آہنگ کیا جائے۔ اپنے بیان میں سراج الحق نے کہا کہ ایف آر بنوں میں بکا خیل کے مقام پر شمالی وزیرستان آپریشن کے متاثرین کے لئے جو کیمپ قائم کیا گیا ہے وہ رہنے کے قابل نہیں متاثرین وہاں رہنے کے لئے تیار نہیں۔ وفاقی حکومت کو بخوبی علم تھا کہ شمالی وزیرستان آپریشن کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر نقل مکانی ہوگی جس کے لئے آپریشن شروع کرنے سے پہلے مکمل تیاری کی جانی چاہئے تھی لیکن ایسا نہیں کیا گیا آپریشن متاثرین جس کرب اور دکھ سے گزر رہے ہیں اسے الفاظ میں بیان نہیں کیا جا سکتا بالخصوص خواتین ، بچے اور ضعیف العمر افراد لمبی مسافت پیدل طے کرکے بنوں اور دیگر اضلاع پہنچتے ہیں پھر بھی اُن کے لئے رہائش اور طعام اور دیگر ضروریات کا بندوبست نہیں ہوتا۔ موجودہ حالات میں قبائلی علاقوں کے عوام میں شدید اشتعال اور غم و غصہ جنم لے رہا ہے۔
سراج الحق