دہشت گردی ایسی جگہوں پر وارداتیں کرتے ہیں جہاں سے پاکستان زیادہ بدنام ہو: اعجاز الحق

دہشت گردی ایسی جگہوں پر وارداتیں کرتے ہیں جہاں سے پاکستان زیادہ بدنام ہو: اعجاز الحق

 اسلام آباد (آئی این پی) مسلم لیگ (ضیائ) کے سربراہ و رکن قومی اسمبلی اعجاز الحق نے موبائل فون پر ود ہولڈنگ ٹیکس کے نفاذ کو جگا ٹیکس قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکومت ٹیکس نیٹ بڑھانے کی بجائے عوام کی جیبیں کاٹنے پر تلی ہوئی ہے ۔حکومت دہشت گردی کو کنٹرول کرنے کیلئے دو ٹوک موقف اختیار کرے دہشت گردی کے واقعات پر حکومت مذمت تو کرتی ہے لیکن ان پر کوئی فالو اپ نہیں کیا جاتا جس کی وجہ سے واقعات میں اضافہ ہورہا ہے۔ وہ اتوار کو پارلیمنٹ ہاﺅس کے باہر میڈیا سے گفتگو کررہے تھے اعجاز الحق نے کہا کہ نانگا پربت میں غیر ملکی سیاحوں پر ہونے والا حملہ نہ صرف قابل مذمت ہے بلکہ یہ ملکی سافٹ امیج پر حملہ ہے انہوں نے کہا کہ دہشت گرد ایسی جگہوں پر وارداتیں کررہے ہیں جس سے ملک کی بدنامی زیادہ ہوتی ہے انہوں نے کہا کہ دہشت گردی پر قابو پانے کیلئے قومی سطح کی دو ٹوک پالیسی اختیار کرنا ہوگی جس میں تمام سٹیک ہولڈرز کی رائے کو شامل کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ موبائل فون صارفین پر ود ہولڈنگ ٹیکس کا نفاذ حکومت کی جانب سے جگا ٹیکس لگانے کے مترادف ہے انہوں نے کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے حکومت شارٹ کٹ کا راستہ اختیار کررہی ہے اور بڑے بڑے سرمایہ داروں تاجروں موبائل فون کمپنیوں کے مالکان پر ٹیکس عائد کرنے کی بجائے غریب عوام کی جیبیں کاٹنے پر تلی ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ حکومت پہلے ہی غریب عوام پر ان ڈائریکٹ ٹیکس عائد کرکے اربوں روپے بٹور رہی ہے اور اب موبائل فون پر ود ہولڈنگ ٹیکس عائد کرکے عوام کو مزید مشکلات کا شکار کرنا چاہتی ہے انہوں نے کہا کہ حکومت کو ایسے اقدامات نہیں اٹھانے چاہئیں جس سے مہنگائی میں اضافہ ہو اور عام آدمی کو مشکلات پیش آئیں۔