وزیراعظم سے برطانوی خصوصی نمائندہ مائیکل باربر، سری لنکن وزیر خارجہ کی ملاقات

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی) وزیراعظم محمد نوازشریف نے کہا ہے کہ پاکستان سری لنکا کے ساتھ تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے باہمی دوروں اور مسلسل رابطے کے ذریعے ان میں مزید وسعت لائی جائے۔ وزیراعظم نے یہ بات سری لنکا کے وزیر خارجہ پروفیسر جی ایل پیری سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر سری لنکا کے ہائی کمشنر بھی موجود تھے۔ وزیراعظم نے بے گھر افراد کی بحالی اور جنگ سے ستائے علاقوں کی تعمیر نو کے لئے سری لنکا کی کوششوں کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا پاکستان نے ہمیشہ دہشت گردی کو شکست دینے کے لئے سری لنکا کی کوششوں کی حمایت کی۔ پاکستان یو این انسانی حقوق کونسل اور سلامتی کونسل میں بھی سری لنکا کی حمایت جاری رکھے گا۔ دونوں ممالک کے درمیان جامع معاشی شراکت کے سمجھوتے کو جلد ازجلد حتمی شکل دی جائے۔ سری لنکن وزیر خارجہ نے انہیں کولمبو کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی۔وزیراعظم محمد نوازشریف نے کہا پاکستان سری لنکا کے ساتھ اپنے خوشگوار اور دوستانہ تعلقات کی بہت قدر کرتا ہے۔ پاکستان سری لنکا کی اقتصادی خودمختاری، انسانی وقار اور اپنے عوام کے لئے سماجی انصاف کے فروغ کے سلسلہ میں اس کی انتھک کاوشوں کا بہت مداح ہے۔ وزیراعظم محمد نوازشریف نے دونوں ممالک کے درمیان گہرے اقتصادی روابط استوار کرنے اور سری لنکا کے ساتھ دوطرفہ جامع اقتصادی شراکت داری معاہدے کو جلد حتمی شکل دینے کی پاکستانی خواہش ظاہر کی۔ انہوں نے کہاکہ اس سے سرمایہ کاری، خدمات، کسٹمز تعاون کے کلیدی شعبوں سمیت اقتصادی اور تجارتی روابط کے فروغ میں مدد ملے گی۔ دونوں ممالک کو سیاحت کے فروغ کے ذریعے آسان اور بکثرت عوامی رابطوں کے لئے مل کر کام کرنا چاہئے۔ وزیراعظم سے برطانوی خصوصی نمائندے سر مائیکل باربر کی قیادت میں وفد سے بھی ملاقات کی۔اس موقع پر وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا کہ پاکستان میں تعلیم اور صحت کے شعبوں کو بہت سے مسائل درپیش ہیں، اکیسویں صدی کے تقاضوں کے مطابق ان کی اصلاح کے لئے فعال حکمت عملی کی ضرورت ہے۔ وفد نے پاکستان میں سرکاری سکولوں میں تعلیمی ڈھانچے کی بہتری پر تبادلہ خیال کیا۔ وفد میں برطانوی ہائی کمشنر ایڈم تھامسن، شعبہ بین الاقوامی ترقی کی نائب سربراہ ڈیبی پالمر اور ڈی ایف آئی ڈی کے سینئر گورننس مشیر کلئیرویلنگز شامل تھے۔ وزیراعظم محمد نواز شریف نے صحت اور تعلیم کے ڈھانچہ کی بہتری بالخصوص نوجوانوں کی تعلیم کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہاکہ پاکستان تعلیم یافتہ اور ہنر مند افرادی قوت پیدا کرکے ترقی اور خوشحالی کی شاہراہ پر گامزن ہو سکتا ہے جو قوم کی تقدیر بدلنے پر پوری طرح آراستہ ہو۔ وزیراعظم نے پنجاب کے تعلیمی شعبے کے لئے سرمائیکل باربر کے اچھے کام کو سراہا اور اسے قومی سطح پر بروئے کار لانے کا عزم ظاہر کیا۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار، وزیر منصوبہ بندی وترقی احسن اقبال، وزیر پانی وبجلی خواجہ محمد آصف، وزیراعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی سرتاج عزیز، وزیراعلی پنجاب شہباز شریف، وزیرمملکت برائے نیشنل ہیلتھ سروسز سائرہ افضل تارڑ، وزیراعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی، وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر مصدق ملک اور سینئر حکام بھی ملاقات کے موقع پر موجود تھے۔