لیگی قیادت نے این اے 48 میں شکست سے متعلق رپورٹ طلب کر لی

لیگی قیادت نے این اے 48 میں شکست سے متعلق رپورٹ طلب کر لی

اسلام آباد (وقائع نگار خصوسی) باخبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے پاکستان مسلم لےگ (ن) کی اعلیٰ قےادت نے حلقہ این اے 48 سمےت پنجاب اسمبلی کے دو حلقوں کے ضمنی انتخابات مےں مسلم لےگ (ن) کے امےدواروں کی شکست کے بارے مےں رپورٹ طلب کر لی ہے اور شکست کی وجوہات معلوم کرنے کے لئے کہا ہے رپورٹ موصول ہونے کے بعد پارٹی کی سطح پر فےصلہ کےا جائے گا۔ سابق رکن اسمبلی انجم عقیل خان نے اشرف گجر کی طرف سے شکست کا ذمہ دار قرار دینے کا الزام مسترد کر دیا ہے جبکہ اشرف گجر نے شکست کی تمام تر ذمہ داری انجم عقےل پر ڈال دی ہے۔ دیہی علاقوں میں اشرف گجر کو اکثریت ملی تاہم شہری علاقوں میں چودھری اشرف گجر کو شکست ہوئی ہے۔ جمعہ کو پارلیمنٹ ہاﺅس میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انجم عقیل نے اشرف گجر کی طرف سے عائد کئے گئے الزامات کو مسترد کر دیا اور کہا کہ اشرف گجر کا اسلام آباد سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ میں نے پارٹی قیادت کے حکم پر اشرف گجر کے جلسے منعقد کرائے اور انہیں ووٹ دلوائے۔ دیہی علاقوں سے جتنے ووٹ 11 مئی کو مجھے ملے تھے اتنے ہی ووٹ اشرف گجر کو بھی ملے۔ انہوں نے کہا کہ اشرف گجر نے وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان اور سینٹ میں قائد ایوان راجہ ظفرالحق کیخلاف بھی موبائل فون پر ایس ایم ایس بھجوائے ہیں جو میرے پاس محفوظ ہیں۔ مسلم لیگ (ن) کی مرکزی قیادت ضمنی الیکشن میں شکست کی کوئی بھی انکوائری کروالے اس میں پیش ہوکر اپنا م¶قف بیان کروں گا۔
این اے 48