راجہ پرویز اشرف سانگھڑ میں پیدا ہوئے، 88ءسے سیاسی سفر کا آغاز کیا

اسلام آباد (بی بی سی) وزارت عظمیٰ کی ہما مخدوم شہاب الدین اور قمرالزمان کائرہ کے سر سے ہوتے ہوئے تحصیل گوجر خان کے قصبہ مندرہ کے راجہ پرویز اشرف کے سر پر آن بیٹھی ہے۔ بی بی سی کے مطابق راجہ پرویز کا خاندان نہری نظام متعارف ہونے پر سندھ منتقل ہو گیا تھا۔ راجہ پرویز اشرف 1950ءمیں سانگھڑ میں پیدا ہوئے۔ 1970ءمیں سندھ یونیورسٹی سے گریجوایشن کی اور گوجر خان منتقل ہو گئے۔ یہیں سے سیاست کا آغاز کیا۔ ان کے چچا صدر ایوب کی کابینہ میں وزیر تھے۔ ابتدا میں راجہ پرویز اشرف نے جوتوں کا کارخانہ لگایا پھر پراپرٹی کے کاروبار سے منسلک ہو گئے۔ 1988ءمیں راولپنڈی میں پیپلزپارٹی کی سیاست میں انتہائی اہم کردار ادا کیا۔ 1990, 93, 97ءکے عام انتخابات میں مسلم لیگ اور جماعت اسلامی کے مشترکہ امیدواروں سے شکست کھائی۔ 2002ءمیں پہلی بار حلقہ این اے 51 سے کامیاب ہوئے پھر 2008ءمیں بھی کامیابی حاصل کی۔ بےنظیر کی جلاوطنی کے دور مییں پیپلزپارٹی پارلیمینٹیرین کے سیکرٹری جنرل بنے۔ 31 مارچ 2008ءکو یوسف رضا گیلانی کی کابینہ میں وزیر پانی و بجلی بنے اور دسمبر 2009ءتک ملک سے لوڈشیڈنگ کے خاتمہ کا اعلان کیا جو مہنگا پڑ گیا۔ رینٹل پاور کا سکینڈل بنا اور ان پر رشوت لینے کا الزام لگا۔ انہیں آج تک بجلی وعدہ وفا نہ کرنے پر کڑی تنقید کا سامنا ہے۔