چینی کا بحران 2 سال لے گا: ہمایوں اختر‘ مہینے میں حل کرینگے: رانا ثناء

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وفاقی وزیر اور (ق) لیگ کے ہم خیال گروپ کے جنرل سیکرٹری ہمایوں اختر خان نے کہا ہے کہ حکومت الٹی بھی لٹک جائے تو چینی کا بحران حل نہیں کر سکے گی‘ اگلے 6 ماہ میں یہ شدید ہو جائے گا۔ دوسری جانب پنجاب کے وزیر قانون رانا ثناءاللہ نے دعویٰ کیا ہے کہ الٹا کسی اور کو لٹکنا پڑے گا‘ ہم ایک ماہ میں بحران حل کر کے دکھائیں گے۔ ایک نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں ہمایوں اختر نے کہا ہے کہ میرا چینی سے کوئی تعلق نہیں‘ مجھے میاں منظور وٹو نے پھنسا دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے بغیر سوچے سمجھے فیصلے کئے‘ حکومت نے جب گندم کی 950 روپے قیمت مقرر کی تو یہ نہیں سوچا کہ اس کا باقی فیصلوں پر کیا اثر پڑے گا۔ اب حکومت جو مرضی کر لے یہ بحران دو سال تک حل نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری جماعت اصل پاکستان مسلم لیگ ہے۔ رانا ثناءاللہ نے کہا کہ شوگر ملز منافع خوری کر رہی ہیں۔ حکومت اور شوگر ملوں میں مہینہ پہلے 12 روپے اضافہ کر کے 38 روپے فی کلو چینی فراہم کرنے کا معاہدہ ہوا اس کے باوجود شوگر ملیں غریبوں کی جیبوں پر 14 ارب 40 کروڑ روپے کا ڈاکہ ڈال رہی ہیں۔ شوگر ملوں کا م¶قف ہے کہ عالمی منڈی میں قیمتیں بڑھ گئی ہیں مگر سوال یہ ہے کہ جو سودے اپریل میں ہو چکے ان کا اب عالمی منڈی سے کیا تعلق ہے۔