حکومت بدعنوانی پر معطل افسروں کی دوبارہ تعیناتی نہ کرے: پبلک اکائونٹس کمیٹی

اسلام آباد (ثناء نیوز) قومی اسمبلی کی پبلک اکائونٹس کمیٹی نے محکمہ ڈاکخانہ جات میں بڑے پیمانے پر بے قاعدگیوں اور بے ضابطگیوں پر سابق ڈی جی پوسٹل سروسز مسعود الحسن سمیت 3 سابقہ افسروں کو طلب کر لیا۔ پوسٹل سروسز میں ریونیو سٹیمپ و دیگر سٹیشنری کی چھپائی میں سنگین بے قاعدگیاں کی تحقیقات کے لئے خصوصی کمیٹی قائم کر دی گئی ہے ۔ پبلک اکائونٹس کمیٹی کا اجلاس چیئرمین چوہدری نثار علی خان کی صدارت میں پارلیمنٹ ہائوس میں ہوا ۔ پبلک اکائونٹس کمیٹی نے موبائل فونز ٹاورز کے انسانی صحت پر مضر اثرات مرتب ہونے کے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے وزیر ماحولیات کو سروے اور رپورٹ کمیٹی میں پیش کرنے کی ہدایت کی۔ اجلاس میں دوسری آل پاکستان یونیورسٹیز گیمز کے حوالے سے خصوصی آڈٹ رپورٹ کا جائزہ لیا گیا۔ ایچ ایف سی حکام نے بتایا کہ بے قاعدگی ثابت ہونے پر اس وقت کے ڈی جی سپورٹس کو معطل کر دیا گیا تھا ۔ پی اے سی نے معطل افسر کو دوبارہ اعلیٰ عہدے پر تقرری کو افسوسناک قرار دیا اور ہدیات کی کہ حکومت معطل افسران کو دوبارہ اہم عہدوں پر تعینات نہ کرے ۔ پی اے سی نے سیکرٹری ماحولیات کامران لاشاری کوہدایت کی کہ موبائل فونز ٹاورز کے انسانی صحت پر منفی اثرات کا سروے کیا جائے ۔ ماہرین سے رائے لیکر اس بارے میں آگاہ کیا جائے ۔ ہائی پاور ٹرانسمیشن لائنوں ‘ گرڈ سٹیشنوں ‘ موبائل فونز ٹاور کو انسانی آبادی سے دور رکھا جائے۔
پبلک اکائونٹس کمیٹی