آڈیٹر جنرل اختیارات بل پیش، بلاک شناختی کارڈ والے عدالت جاسکتے ہیں: وزارت داخلہ

آڈیٹر جنرل اختیارات بل پیش، بلاک شناختی کارڈ والے عدالت جاسکتے ہیں: وزارت داخلہ

اسلام آباد (خبر نگار خصو صی )آڈیٹر جنرل (کارہائے منصبی اختیارات اور ملازمت کی قیود و شرائط) (ترمیمی) بل 2017ءقومی اسمبلی میں پیش کردیا گیا۔ بل پارلیمانی سیکرٹری خزانہ رانا محمد افضل خان نے پیش کیا جبکہ وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی نے کہا ہے کہ چکدرہ ٹرانسفارمر مرمتی ورکشاپ 6 کروڑ 20 لاکھ روپے کی عدم ادائیگی کی وجہ سے بند تھی‘ اس کے 3 کروڑ دس لاکھ روپے ادا کردیئے گئے ہیں‘ تمام ڈسکوز کی کارکردگی ماہانہ نظرثانی اجلاس میں زیر غور لائی جاتی ہے۔ وزارت داخلہ کی جانب سے بتایا گیا جن کے شناختی کارڈ بلاک ہیں ان کے پاس اختیار ہے کہ وہ عدالت سے رجوع کریں۔ نیشنل ایکشن پلان کے تحت کالعدم تنظیموں کے دوبارہ فعال نہ ہونے کو یقینی بنایا جارہا ہے، بلوچستان میں مفاہمت کی جانب اقدامات اٹھاتے ہوئے فراریوں یا کالعدم قرار دیئے گئے افراد کے سرنڈر‘ مفاہمت اور بحالی جاری ہے۔ دہشتگردوں اور دہشتگرد تنظیموں کی مالی مدد کو بند کیا گیا ہے۔ تمام صوبائی سی ٹی ڈیز میں کاﺅنٹر ٹیرر ازم فنانسنگ یونٹ قائم کئے جارہے ہیں۔ صدقہ و خیرات کے قواعد کے لئے پالیسیوں کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔ مدارس کی رجسٹریشن کے حوالے سے اسلام آباد‘ پنجاب اور سندھ نے سو فیصد کام مکمل کرلیا ہے۔ فاٹا اصلاحات کی کابینہ نے منظوری دیدی ہے۔ دہشتگردوں کے لئے انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کے غلط استعمال کے خلاف ٹھوس اقدامات اٹھائے گئے ہیں تاہم ٹھوس طریقہ کار موجود نہ ہونے کی وجہ سے یہ عمل نسبتاً سست ہے۔ افغان مہاجرین کی واپسی کی تاریخ اور مہاجرین کی رجسٹریشن کا عمل نسبتاً سست ہے۔ پارلیمانی سیکرٹری منصوبہ بندی و ترقیات ڈاکٹر عباد اللہ نے کہا چاروں صوبائی ہیڈ کوارٹروں میں ریلوے ماس ٹرانزٹ سسٹمز کی شمولیت کی پاکستانی تجویز سے اتفاق کرلیا گیا ہے۔ پارلیمانی سیکرٹری منصوبہ بندی و ترقیات ڈاکٹر عباد اللہ نے بتایا کہ 2013-14ءکے تخمینہ جات کے مطابق آبادی کا 29.5 فیصد خط غربت سے نیچے ہے جو پانچ کروڑ 50 لاکھ افراد بنتے ہیں۔
قومی اسمبلی/ وقفہ سوالات