آئین کو اسلامی سانچے میں ڈھالنے کےلئے سفارشات موجود‘ پارلیمنٹ کی مرضی نہ ہو تو کچھ نہیں کر سکتے: مولانا شیرانی

آئین کو اسلامی سانچے میں ڈھالنے کےلئے سفارشات موجود‘ پارلیمنٹ کی مرضی نہ ہو تو کچھ نہیں کر سکتے: مولانا شیرانی

اسلام آباد (سپیشل رپورٹ) اسلامی نظریاتی کونسل کے سابق سربراہ اور ممتاز عالم دین مولانا خان محمد شیرانی نے کہا ہے کہ میں اپنے کام سے مطمئن ہوں۔ اسلامی نظریاتی کونسل نے قوانین کو اسلامی سانچے میں ڈھالنے کے لئے پوری کوششیں کی ہیں لیکن ا گر پارلیمنٹ آئین کو اسلام کے سانچے میں نہ ڈھالنا چاہے تو ہمارا کیا قصور ہے۔ گزشتہ شام پارلیمنٹ ہا¶س میں نوائے وقت سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمارا کام تو راستہ دکھانا تھا جو ہم نے دکھا دیا۔ پارلیمنٹ کے پاس اسلامی نظریاتی کونسل کی سفارشات موجود ہیں وہ ان کی روشنی میں ملکی قوانین کو اسلامی بنا سکتی ہے لیکن اگر اس کی منشا نہ ہو تو کونسل کچھ نہیں کر سکتی۔ مولانا شیرانی سے اسفسار کیا گیا کہ کیا کونسل کے پاس کوئی اختیار نہیں کہ وہ پارلیمنٹ پر اپنا اثرو رسوخ استعمال کر کے قوانین کو اسلامی سانچے میں ڈھالے تو انہوں نے کہا کہ کوسنل کے پاس ایسا کوئی اختیار نہیں۔
مولانا شیرانی