سینٹ قائمہ کمیٹی نے یوٹیوب فوری طور پر کھولنے کی سفارش کر دی

اسلام آباد (این این آئی) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ یو ٹیوب فوری طور پرکھولنے کی سفارش کر دی جبکہ وزیرمملکت برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی انوشہ رحمان نے کہا کہ یو ٹیوب کی بندش سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق کی گئی تھی جس میں سپریم کورٹ نے انٹر نیٹ سے توہین آمیز مواد کو ہٹانے کے احکامات جاری کیے تھے متعلقہ محکموں نے ہر کوشش کر لی مگر مواد کو وہاں سے ہٹایا نہ جا سکا اس لئے یو ٹیوب بند کرنا پڑی کمیٹی نے پی ٹی سی ایل کی نجکاری کیلئے وزارت قانون اور نجکاری کمیشن کے معاہدوں کی تفصیلات کی رپورٹ 15 دن کے اندر طلب کر لی ۔جمعرات کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر محمد ادریس صافی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد ہوا۔ اجلاس کے دوران ذیلی کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی کی یو ٹیوب کے حوالے سے پیش کی گئی رپورٹ کا جائزہ لیا گیا اور ذیلی کمیٹی کی رپورٹ کے مطابق چیئرمین کمیٹی نے یو ٹیوب کی بندش کو فوری طور پر ختم کرنے کی سفار ش کر دی۔ پاکستان میں آئی ٹی سینٹر قائم کرنے کے حوالے سے چیف ایگزیکٹو آفیسر یو ایس ایف نے کمیٹی کو بتایا کہ پاکستان کو آئی ٹی کی سروس فراہم کرنے کے لئے حکومت متعدد اقدامات کر رہی ہے اور اس سلسلے میں پنجاب، سندھ اور خیبر پی کے میں 1043 ایجوکیشنل براڈ بینڈ سینٹرز اور 297 کمیونٹی براڈ بینڈ سینٹرزقائم کر دیئے گئے ہیں اور ٹیلی سینٹر کی سہولت چاروں صوبوں اور فاٹا میں فراہم کرنے کے اقدامات کئے جا رہے ہیں جس پر سینیٹر زاہد خان نے کہا کہ یہ ادارہ زبانی جمع خرچ سے کام لیتا ہے اور کمیٹی کو غلط معلومات فراہم کرتے ہیں ایک سال پہلے ایک ٹاور لگانے کی درخواست دی تھی مگر ابھی تک عمل درآمد نہیں ہو سکا اور متعلقہ افسران ہمارا فون سننے کے بھی روا دار نہیں ہوتے جس پروزیرمملکت نے یقین دہانی کرائی کہ جلد ہی ٹاور نصب کرا دیا جائے گا۔ کمیٹی کو آگا ہ کیا گیا کہ پورے ملک میں 500 آئی ٹی سینٹر قائم کیے جارہے ہیں۔