چینی صدر آج پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرینگے

اسلام آباد (ایجنسیاں+ نوائے وقت رپورٹ) چین کے صدر شی جن پنگ آج (منگل کو) پارلیمینٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔ اجلاس ٹھیک نو بجکر 25منٹ پر شروع ہو جائے گا۔ تمام سیاسی، دینی جماعتوں قوم پرست جماعتوں کے ارکان پارلیمنٹ مہمان صدر کا استقبال کریں گے۔ پالیمنٹ ہاؤس آمد پر وزیراعظم باضابطہ طور پر ان کا استقبال کریں گے۔ چینی صدر پالیمنٹ ہاؤس کے سولر انرجی سسٹم کا افتتاح کریں گے۔ وزیراعظم، سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق، چیئرمین سینٹ رضا ربانی، سید خورشید شاہ، چوہدری اعتزاز احسن چینی صدر سے ملاقات کریں گے۔ صدر شی کا خطاب 40 منٹ کا ہوگا۔ چینی زبان میں تقریر کا انگریزی اور اردو میں ترجمہ کیا جائے گا۔ عسکری قیادت سمیت اہم شخصیات کو چینی صدر کا خطاب سننے کے لئے مدعو کیا گیا ہے۔ خصوصی کارڈز جاری کئے گئے ہیں۔ چاروں گورنرز، وزراء اعلیٰ بشمول صدر و وزیراعظم آزادکشمیر، اہم ممالک کے سفارتکار، اعلیٰ سیاسی شخصیات بھی موجود ہونگی۔ چینی خاتون اول سمیت ساٹھ رکنی وفد بھی اجلاس میں شریک ہوگا۔ پارلیمنٹ ہائوس کے دروازے صبح ساڑھے 8 بجے بند کر دیئے جائیں گے۔ چینی صدر کے خطاب کے بعد وزیر اعظم نواز شریف اور اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ مہمان چینی صدر کا پارلیمینٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب پر ان کا شکریہ اداکریں گے۔ عالمی رہنمائوں میں چینی صدر شی جن پنگ کا پاکستان میں 18 واں پارلیمانی خطاب ہو گا اس قبل چین کے صدر جنگ ژی مین نے 2دسمبر 1996کو سینٹ کے خصوصی اجلاس سے خطاب کیا تھا۔ صدر شی مشترکہ اجلاس سے خطاب کرنے والے تیسرے صدر ہونگے۔ اس موقع پر پارلیمنٹ ہائوس کی سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔ سکیورٹی کے فرائض فوج کا ٹرپل تھری بریگیڈ انجام دے گا۔