پاکستان، چین مذاکرات میں مشرق وسطیٰ، یمن کی صورتحال میں تبادلہ خیال

اسلام آباد (سہیل عبدالناصر) پاکستان اور چین کی قیادت نے دوطرفہ مذاکرات کے دوران مشرق وسطیٰ اور بطور خاص یمن کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ دفتر خارجہ کے ذرائع کے مطابق یمن کے پس منظر میں خلیجی ملکوں کی طرف سے سلامتی کونسل میں پیش کی گئی قرارداد کی چین نے اگرچہ حمایت کہ لیکن وہ یمن میں لڑائی کا جلد از جلد خاتمہ چاہتا ہے اور پاکستان کا بھی یہی مؤقف ہے۔ اس ذریعہ کے مطابق وزیراعظم نوازشریف اور چین کے صدر شی چن پنگ نے اتفاق کیا کہ یمن میں بغاوت ختم کر کے سیاسی قیادت کو ملک کے معاملات سدھارنے کا موقع دیا جانا چاہئے۔ ایک اور ذریعے کے مطابق یمن کی صورتحال پر پاکستان ا ور چین کے درمیان پہلے سے مشاورت جاری ہے۔اور چین پاکستان کے اس موقف کا حامی ہے کہ یمن بحران کا سیاسی ذرائع سے حل نکالا جانا چاہئے۔ اسکے ساتھ ہی دونوں ملک سعودی عرب کی سلامتی کو لاحق خطرات کا بھی ادراک رکھتے ہیں لیکن اسکے ساتھ ہی چین کا یہ بھی مؤقف ہے کہ خلیج میںبحران سے امریکہ فائدہ اٹھا رہا ہے۔ چین کا ایران اور خلیجی ملکوں کیلئے یہی پیغام ہے کہ وہ باہمی مسائل کے گرداب سے نکلیں۔