دہشت گردی کے خاتمے تک قومی ایکشن پلان جاری رہے گا: صدر

اسلام آباد ( سپیشل رپورٹ + نیوز ایجنسیاں) صدر ممنون حسین نے کہا ہے کہ ملک مشکل دور سے گزر رہا ہے، ہمیں اس وقت بہت سے مسائل کا سامنا ہے  مشکلات ہمیشہ نہیں رہیں گی، حکومت اور ہماری بہادر افواج جس ہمت اور جوانمردی سے دہشت گردوں سے نمٹ رہے ہیں  وہ دن دور نہیں جب ملک میں امن وامان اور سکون کا دور دورہ ہوگا، حکومت مسائل کے حل کے لئے  تمام تر توانائیاں صرف کر رہی ہے، حکومت کی یہ کاوشیں جلد کامیابیوں کی صورت میں قوم کے سامنے آ جائیں گی۔ جمہوری ادارے مستحکم ہو رہے ہیں، یہاں محنتی اور باصلاحیت افراد کی کمی نہیں ۔ ہمیں ذمہ دار شہری کا فرض نبھاتے ہوئے ملکی ترقی اور خوشحالی کے لئے کام کرنا ہوگا۔ ایوان صدر میں یوم پاکستان کی تیاریوں کے سلسلے میں منعقدہ تقریب ’’جیوے پاکستان ‘‘سے خطاب کرتے انہوں نے کہا اس دن کا مقصد صرف تقریبات منانا ہی نہیں بلکہ ان نظریات اور افکار کو آپ تک پہنچانا بھی ہے جن کی روشنی اس مملکت پاکستان کے وجود کا سبب بنی۔ ان لاکھوں لوگوں کو یاد کرنا اورانہیں خراجِ تحسین پیش کرنا ہے جن کی بدولت آج ہم ایک آزاد ملک میں سانس لے رہے ہیں، اپنے ان بزرگوں کو خراج تحسین پیش کرنے کا سب سے بہترین طریقہ یہ ہے کہ ہم ان کے دئے ہوئے اس تحفے کی قدر کریں۔ ذمہ دار شہری بنیں اور اس کی ترقی اور خوشحالی کے لئے کام کریں اگر ملک خوشحال ہوگا تو ہم خوشحال ہوں گے۔ یہ ملک ترقی کرے گا تو ہماری ترقی ہوگی۔صدر نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے پاکستان کو لاتعداد نعمتوں سے نوازا ہے مگر اس ملک کا سب سے بڑا خزانہ یہاں کے رہنے والے محنتی، جفاکش، ذہین اور باہمت لوگ ہیں۔ اس کا خزانہ یہ بچے ہیں  قوموں کی ترقی میں محنتی اور باصلاحیت افرادی قوت کا کردار بہت اہم ہوتا ہے۔ قدرت نے ہمارے ساتھ اس معاملے میں بھی فیاضی کا مظاہرہ کیا ہے۔ آج دہشت گردی کا شکار ہیں تو کل انشااللہ ملک میں امن ہوگا۔ حکومت اور ہماری بہادر افواج جس ہمت اور جواں مردی سے دہشت گردوں سے نمٹ رہے ہیں ، وہ دن دور نہیں جب ملک میں امن وامان اور سکون کا دور دورہ ہوگا۔ صدر مملکت نے کہا حکومت مسائل کے حل کے لئے اپنی تمام تر توانائیاں صرف کر رہی ہے، حکومت کی یہ کاوشیں جلد ہی کامیابیوں کی صورت میں قوم کے سامنے آ جائیں گی۔ اقتصادی میدان میں بھی حکومت کی پیش رفت جاری ہے۔ چین کے تعاون سے اقتصادی راہداری کے منصوبے پر کام شروع ہو چکا ہے۔ اس سے نہ صرف پاکستان بلکہ پورے خطے میں کاروباری سرگرمیوں کی وسعت اور اس کے نتیجے میں ہونے والی خوشحالی کے ثمرات عوام تک بھی پہنچیں گے۔  ضروری ہے کہ ملک میں پھیلی ہوئی بدعنوانی کو ختم کریں ایسے لوگوں کو بے نقاب کریں جو اس ملک کی بنیادیں بدعنوانی سے کھوکھلی کر رہے ہیں۔ صدر  نے وطن عزیز کے بہادر بیٹوں، بیٹیوں، ماؤں، بہنوں اور بھائیوں کو بھی سلام پیش کیا جنہوں نے مادر وطن کی سلامتی کے لئے اپنی جانوں کے نذرانے دیئے۔ بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے صدر ممنون حسین نے کہا دہشت گردی انتہاپسندی ، جرائم کے خاتمہ تک قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد جاری رہے گا۔ سزائے موت کے حوالے سے یورپی یونین کی اپنی سوچ، پاکستان کا اپنا قانون ہے۔ شقت حسین کی عمر سے متعلق حقائق سامنے آنے کے بعد فیصلہ کرینگے۔ صولت مرزا اور شفقت حسین کی پھانسی مؤخر کرنے کی ایڈوائس پر فیصلہ کیا۔ شفقت حسین کے بارے میں گزشتہ7 سال تک میڈیا کیوں خاموش رہا۔ شفقت حسین سے متعلق عمر کا ریکارڈ سامنے آنے پر فیصلہ ہوگا۔ اسلام نے جو سزائیں مقرر کیں ان سے لوگوں میں جرائم کرنے کا خوف پیدا ہوتا ہے۔ قومی ایکشن پلان کے عملدرآمد کی رفتار سے مطمئن ہوں۔ شفقت حسین کی عمر سے متعلق حقائق سامنے آنے کے بعد فیصلہ کرینگے۔