وزیراعظم کے غیر ملکی دوروں پر اخراجات اپوزیشن سینٹ میں تحریک التوا لائیگی

اسلام آباد(آن لائن) سینیٹ میں حزب اختلاف تحریک التواء پیش کریگی جس میں حکومت سے استفسار کیا جائیگا کہ آیا وزیراعظم غیر ملکی دوروں کے دوران اپنے ذاتی کاروبار کے فروغ کے حوالے سے مذاکرات میں مشغول رہے۔  آن لائن سے بات چیت کرتے ہوئے عوامی نیشنل پارٹی کے سینیٹر عبدالنبی بنگش نے کہا کہ موجودہ حکومت کے پاس کوئی سوچ نہیں ہے ا سی لئے گزشتہ 100دنوں کے دوران مہنگائی میں کئی گنا اضافہ ہوگیا ہے اور عوام کی چیخیں نکل گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ میاں برادران کے اربوں ڈالر بیرون ملک پڑے ہیں،وہ بیرون سرمایہ کاری کی بجائے اپنے ہی پیسے ملک میں لگا دیں تو بھی بیروزگاری کسی حد تک کم ہوسکتی ہے،(ق) لیگکے سینیٹر کامل علی آغا نے بھی وزیراعظم کے دوروں پر دورے کے پروگرام کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ انکی جماعت سینیٹ کے آئندہ اجلاس میں تحریک التوا پیش کریگی جس میں وزیراعظم کے غیر ملکی دوروں پر اٹھنے والے اخراجات اور قومی خزانے کو پہنچنے والے نقصانات اور ان کے ملکی معیشت پر پڑنے والے منفی یا مثبت اثرات کے حوالے سے جواب طلبی کی جائیگی۔ان کا کہنا تھا کہ ایسا تاثر ملتا ہے کہ وزیراعظم غیر ملکی دوروں کے دوران بیرونی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے پر راغب کرنے کی بجائے اپنی چینی کے کاروبار کے اضافے کیلئے کوشاں ہیں۔ پیپلزپارٹی کے سینیٹر سعیدغنی کا کہنا تھا کہ ان کی جماعت کے بھی وزیراعظم کے مسلسل دوروں اور ان کے بارے میں پارلیمنٹ اور عوام کو اعتماد میں نہ لئے جانے کے بارے میں شدید تحفظات ہیں اور ان تحفظات کا اظہار وہ سینیٹ کے آئندہ اجلاس میں کریں گے۔