ڈیڑھ سال کے دوران جمہوریت کے معیار میں کمی ہوئی: پلڈاٹ

اسلام آباد(نوائے وقت نیوز + صباح نیوز) جمہوریت کے معیار سے متعلق پلڈاٹ کی سالانہ جائزہ رپورٹ پیش کر دی گئی۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ ڈیڑھ سال کے دوران جمہوریت کے معیار میں کمی واقعہ ہوئی۔ جمہوریت کے استحکام کے لئے پیپلز پارٹی ایم کیو ایم اور دیگر جماعتوں نے حکومت کا ساتھ دیا۔ پارلیمانی نظام کمزور ہے، طاقت کا مرکز وزیر اعظم ہے۔ ستر فیصد لوگ اب بھی جمہوریت کو پسند کرتے ہیں۔ غیر سرکاری ادارے پلڈاٹ کی طرف سے ’’پاکستان میں جمہوریت کے معیار کا جائزہ‘‘ کے عنوان سے موجودہ جمہوریت کی ڈیڑھ سالہ جائزہ رپورٹ جاری کر دی گئی ہے جمہوریت سے معاشی ترقی، غربت کا خاتمہ اور انسانی حقوق کا تحفظ کیا جاسکتا ہے، اپوزیشن کا جمہوریت کے تحفظ اور مضبوطی کے لیے پارلیمنٹ کے ذریعے ڈٹ کر کھڑا ہونا خوش آئند ہے، قومی سلامتی کمیٹی کے اختیارات کو جواز فراہم کرنے کے لیے ایکٹ آف پارلیمنٹ کی ضرورت ہے، ملک کی فیصلہ سازی اور سیاسی عمل میں فوج کا عمل دخل فوج کے لیے بھی مفید نہیں ہے۔ آل پارٹیز کانفرنسز کا رجحان پارلیمنٹ کو نیچا دکھاتا ہے کیونکہ اے پی سی میں جماعتوں کے سربراہان اکٹھے ہو کر فیصلہ کرتے ہیں۔ میڈیا صرف سیاست کو فوکس کرتا ہے دیگر معاشرتی معاملات میں ان کی توجہ نہیں جس کی وجہ سے ہیجان پیدا ہوتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق رپورٹ کی تیاری میں بین الاقوامی اور قومی فریم ورکس کو استعمال کیا ہے۔