صحافیوں کو خفیہ فنڈز دینے سے متعلق مزید تفصیلات طلب

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کورٹ میں وزارت اطلاعات کی جانب سے صحافیوں کو خفیہ فنڈز دینے سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران عدالت نے ڈپٹی اٹارنی جنرل سے ایسے فنڈز کی مزید تفصیلات جبکہ میڈیا ہا¶سز کے نمائندوں سے بقایا جات کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے سماعت 23 اپریل تک ملتوی کر دی ہے۔ جسٹس جواد ایس خواجہ اور جسٹس خلجی عارف حسین پر مشتمل دو رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی تو میڈیا کے نمائندے‘ وزارت اطلاعات کے وکیل راجہ عامر عباس اور ڈپٹی اٹارنی جنرل دل محمد علی زئی عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت میں ”میڈیا احتساب کمیشن“ کی رپورٹ پیش کی گئی۔ وزارت اطلاعات کی جانب سے بتایا گیا کہ فہرستیں تیار کر رہے ہیں جن کی جانچ پڑتال میں وقت لگ رہا ہے جبکہ متعلقہ دستاویزات اور شواہد بھی اکٹھے کر کے ساتھ لگائے جا رہے ہیں جبکہ میڈیا کے نمائندوں کا کہنا تھا کہ یہ الزامات غلط ہیں میڈیا کو بدنام کرنے کے لئے یہ الزامات ہیں جن کو بنیاد بنا کر ”میڈیا“ کے بقایا واجبات روک لئے گئے ہیں جس سے مالی مشکلات پیش آ رہی ہیں۔ عدالت نے ڈپٹی اٹارنی جنرل سے تفصیلات اور میڈیا نمائندوں سے بقایا روکے گئے بلز کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے مزید سماعت 23 اپریل تک ملتوی کر دی۔