الیکشن کا التوا خطرناک ہوگا: گیلانی، آئندہ مخلوط حکومتیں بنیں گی: پرویزاشرف

اسلام آباد (نوائے وقت نیوز+آئی این پی) سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے الیکشن ہر صورت وقت پر ہونے چاہئیں، الیکشن کا التوا ملک کیلئے خطرناک ہوگا۔ اسلام آباد میں سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ملک میں جمہوریت کے تسلسل کیلئے انتخابات ہر صورت ہونے چاہئیں، الیکشن ملتوی ہوئے تو یہ ملک کیلئے خطرناک ہوگا۔ یوسف رضا گیلانی کا کہنا تھا جمہوریت کو مل کر آگے لے کر چلیں گے۔ ان کی حکومت نے 73 کے آئین کو مکمل طور پر بحال کیا۔ جب ہم حکومت میں آئے تھے اس وقت ملک میں گندم اور آٹا نہیں تھا آج ہم گندم برآمد کرنے کی پوزیشن میں ہیں۔ یوسف رضا گیلانی نے کہا انہوں نے اپنی نااہلی کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کیا ہے۔آئی این پی کے مطابق دونوں سابق وزرائے اعظم نے کہ اقتدار میں اس وقت بھی تمام پارٹیاں تھیں کوئی مرکز میں تھا تو کوئی صوبوں میں، گالیاں صرف پیپلزپارٹی کو ملتی ہیں، ہم نے 73ءکے آئین کو مکمل بحال کیا، آئینی تحفظ سے ایسی نگران حکومت اور الیکشن کمیشن آئے جن پر کوئی انگلی نہیں اٹھاسکتا۔ کسی اسمبلی نے مدت پوری نہیں کی، اسمبلیوں پر شب خون مارنے والوں نے 11سال بعد اپنی مرضی کی نگران حکومت بناتے ہم نے 20 ویں ترمیم سے وہ کام کیا تمام پارٹیوں کی مشاورت سے نگران حکومت قائم ہو۔آئندہ ملک میں مخلوط حکومتیں بنیں گی ہم نے پانچ برسوں میں ثابت کیا اتحادی ہمارے ساتھ خوش رہے ہیں، ہم نے مخالفین کو بھی گلے سے لگایا۔ زرداری ہاﺅس میں پریس کانفرنس کے موقع پر اسلامی تحریک پاکستان کے رہنما بھی موجود تھے۔ سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک کو بحرانوں سے نکالنے کیلئے ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کریں گے، بی بی شہید نے ڈکٹیٹر کو وردی اتارنے پر مجبور کیا اور عالمی دباﺅ پر انتخابات کی فضاءبنی، ہماری بدقمستی تھی وہ سانحہ لیاقت باغ میں شہید ہوگئیں، ہم بی بی شہید کے مشن، افکار اور ویژن کو لے کر چل رہے ہیں۔ اسلامی تحریک پاکستان کے ساتھ جہاں جہاں سیٹ ایڈجسٹمنٹ کی ضرورت ہوئی کریں گے، مل کر جمہوریت کو آگے لے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وقت پر صاف اور شفاف الیکشن انتہائی ضروری ہے ایک بھی دن کی تاخیر ہوئی تو یہ ملک کے خلاف ہوگی۔ اسلامی تحریک پاکستان کے سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین وہادی نے کہا ہمارے ان سے کامیاب مذاکرات ہوئے ہیں، امن و امان، جمہوریت کو مستحکم کرنے کیلئے مل کر کام کریں گے۔ قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقوی کی سربراہی میں آگے بڑھ رہے ہیں۔ سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا اس وقت پاکستان کو اتحاد کی ضرورت ہے۔ عوام کو صاف اور شفاف غیرجانبدار الیکشن دینا ہماری ذمہ داری ہے، ان الیکشن میں فیصلہ ہوگا عوام کو اکٹھا کون کرسکتا ہے، آئندہ ملک میں مخلوط حکومتیں بنیں گی ہم نے پانچ برسوں میں ثابت کیا کہ اتحادی ہمارے ساتھ خوش رہے ہیں، ہم نے مخالفین کو بھی گلے سے لگایا۔ پریس کانفرنس کے دوران دونوں سابق وزرائے اعظم کومیڈیا کے تند و تیز سوالات کا سامنا رہا، ایک صحافی نے سوال کیا آپ آرٹیکل 62,63پر پورا نہیں اترے کیونکہ آپ صادق اور امین نہیں ”بے ایمان“ ہیں جس پر راجہ پرویز اشرف نے کہا جو انہوں نے نہیں کہا وہ بھی آپ نے کہہ دیا۔ پریس کانفرنس کے دوران میڈیا کے تندوتیز سوال کی تاب نہ لاتے ہوئے دونوں سابق وزرائے اعظم کے ایڈوائزر اکرم شہیدی نے انہیں اٹھا دیا، دونوں سابق وزرائے اعظم سوالات کا جوابات دیئے بغیر اٹھ کر چلے گئے۔اسلام آباد (نیٹ نیوز) دو سابق نااہل وزرائے اعظم یوسف رضا گیلانی اور راجہ پرویز اشرف نے سابق صدر پرویز مشرف کی گرفتاری اورغداری کا مقدمہ چلانے کے معاملے پر خاموشی اختیار کر لی۔ یوسف رضا گیلانی نے دعویٰ کیا بے نظیر کے قاتل پکڑنے جا چکے ہیں تاہم وہ نام نہیں بتا سکتے۔ یوسف رضا گیلانی نے پرویز مشرف کی گرفتاری سے متعلق سوال کا جواب دینے سے گریز کیا۔