مذہب‘ فرقے‘ برادری‘ زبان کی بنیاد پر ووٹ مانگنے والے کو 3 سال قید ہو گی: الیکشن کمشن

اسلام آباد (بی بی سی/ اے پی اے) الیکشن کمشن نے برادری اور مذہب ، فرقے، زبان کی بنیاد پر ووٹ مانگنے میں ملوث پائے جانے والے امیدواروں کے لئے تین سال کی سزا کا اعلان کیا ہے۔ الیکشن کمشن نے یہ بھی کہا ہے کہ اگر کوئی امیدوار ووٹر کو رشوت دینے میں ملوث پایا گیا تو ا±سے بھی تین سال قید کی سزا دی جائے گی۔کمشن نے پریذائیڈنگ افسران کو اختیار دیا ہے کہ وہ الیکشن کمشن کے قوانین کی خلاف ورزی پر کسی کو بھی سزا دے سکتے ہیں۔ اس سے قبل اتوار کو الیکشن کمشن نے مذہب کی بنیاد پر ووٹ مانگنے کو ممنوع قرار دیا تھا تاہم اس حوالے سے سزا تجویز نہیں کی تھی۔ دوسری جانب الیکشن کمشن نے انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ جمعرات تک اپنے پارٹی سرٹیفکیٹس جمع کرا دیں۔ کمشن کے بقول ایسے امیدوار جو سرٹیفکیٹس جمع نہیں کرائیں گے انہیں آزاد امیدوار سمجھا جائے گا۔ الیکشن کمشن کے ترجمان کے مطابق کسی دوسرے شخص کے نام پر ووٹ ڈالنے والے کو بھی 3سال قید کی سزا بھگتنا ہو گی، کسی کو ووٹ سے روکنے پر بھی 3سال قید کی سزا مقرر کر دی گئی ہے۔ انتخابات کے روز پرپذائیڈنگ افسر کی ہدایت پر پولیس بغیر وارنٹ کے کسی کو بھی گرفتار کر سکے گی۔