اسلام آباد ہائیکورٹ : سابقہ دور حکومت میں بھرتی ہونے والے کنٹریکٹ ، ریگولر ملازمین کو بحال کر دیا

اسلام آباد ہائیکورٹ :  سابقہ دور  حکومت میں بھرتی ہونے والے  کنٹریکٹ ، ریگولر ملازمین کو بحال کر دیا

اسلام آباد(آئن لائن)جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ محمد انور خان کا سی اور جسٹس نور الحق این قریشی پر مشتمل دورکنی بنچ نے سابقہ دور حکومت میں بھرتی ہونے والے کنٹریکٹ اور ریگولر ملازمین کو بحال کر دیا اور اسلام آباد ہائیکورٹ کے سنگل بنچ کے فیصلے کو معطل کر دیا۔ پیر کے روز اسلام آباد ہائیکورٹ نے فیڈرل ڈائریکٹوریٹ آف ایجوکیشن کے لیکچرار شوکت مغل وغیرہ کے کیس کی سماعت ہوئی۔ درخواست گزاروں کے وکیل محمد رمضان خان عدالت میں پیش ہوئے۔ کیس کی سماعت چیف جسٹس محمد انور خان کا سی اور جسٹس نور الحق این قریشی پر مشتمل دور کنی بنچ نے کی۔ درخواست گزاروں کے وکیل نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ سابقہ حکومت میں کنٹریکٹ ملازمین بھی شامل تھے انہیں ریگولائز کیا گیا۔ انہوں نے عدالت کو بتایا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی پر مشتمل سنگل بنچ نے 29مئی 2014ء کو ایک آرڈر جاری کیا جس میں ڈیڑھ لاکھ کے قریب کنٹریکٹ و ریگولر ملازمین کو غیر قانونی قرار دے دیا گیا تھا۔