پاکستان بھارت کے خراب تعلقات کی بڑی وجہ مسئلہ کشمیر ہے: وزیراعظم

پاکستان بھارت کے خراب تعلقات کی بڑی وجہ مسئلہ کشمیر ہے: وزیراعظم


اسلام آباد (اے پی پی) وزیر اعظم راجہ پرویزاشرف نے کہا ہے کہ پاکستان پڑوسی ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتا ہے، پاک بھارت تعلقات میں کشیدگی اور خرابی کی بڑی وجہ کشمیر کا مسئلہ ہے۔ نجی ٹی وی کو انٹرویو میں وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے عام آدمی کی بہبود کیلئے کام کیا ہے۔ بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے ذریعے معاشرہ کے پسماندہ اور غریب افراد کی مدد کی۔ تنخواہوں اور پینشن میں اضافہ کیا گیا۔ انہوں نے کہا افغانستان کے مسئلے سے پاکستان براہ راست متاثر ہور رہا ہے۔ پاکستان چاہتا ہے کہ متعلقہ فریقوں سے مذاکرات کے ذریعے افغانستان کے مسئلے کا حل نکالا جائے۔ اس معاملے پر کسی فریق میں بدگمانی نہیں ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ کشمیری عوام کی خواہشات اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہئے۔ ہم دوطرفہ مذاکرات پر تیار ہیں۔ بھارت سے تمام تصفیہ طلب مسائل مذاکرات کے ذریعے حل کئے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار سویلین منتخب جمہوری اپنی پانچ سالہ آئینی مدت پوری کر رہی ہے۔ اس سے جمہوریت مستحکم ہوئی۔ اب تمام سیاسی جماعتیں عوام کی عدالت میں جائیں گی۔ پیپلزپارٹی کارکردگی کی بنیاد میں انتخابات میں حصہ لے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی نے کسی سرمایہ دار اور وڈیرے کو وزیراعظم بنانے کی بجائے ایک کارکن کو وزیراعظم بنا کر شاندار مثال قائم کی۔ یہی جمہوریت کا حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابات وقت پر ہوں گے۔ کسی کو اس میں شک کی گنجائش نہیں ہونی چاہئے۔ عدالتی فیصلوں کا احترام کرتے ہیں۔ عوام جس کو موقع دیں وہی حکومت کرے گا۔
وزیراعظم