حافظ آباد: لالچی والدین نے 10سالہ بچی کا 40 سالہ شخص سے نکاح کر دیا

حافظ آباد: لالچی والدین نے 10سالہ بچی کا 40 سالہ شخص سے نکاح کر دیا


حافظ آباد (نمائندہ نوا ئے وقت) حافظ آباد کے نواحی گاﺅں چھنی وزےراں مےں پےسوں کے لالچ مےں والدےن نے 10 سالہ بےٹی کی شادی 40 سالہ شخص سے کر دی ۔ نکاح رجسٹرار نے5 ہزار روپے لے کر 10 سالہ بچی کا نکاح پڑھوا دےا۔ 10 روز گذرنے کے بعد بھی نکاح نامہ متعلقہ دفتر مےں درج نہیں کروا یاگےا۔ لڑکی اور اس کی والدہ فریدہ بی بی کا کہنا ہے کہ انہوں نے بچی کا نکاح اپنی مرضی سے کےا ہے۔ فرےدہ بی بی نے پےسوں کے لالچ میں دس سالہ فرزانہ کا نکاح محمد منشاءسے کیا اور فرزانہ کو بھی یہ نکاح پسند ہے۔ 10سالہ فرزانہ کے نکاح خواں محمد یوسف کا کہنا ہے کہ اُس نے اُن کا نکاح پڑھایا ہے لیکن بچی کی عمر کم ہونے کی وجہ سے ابھی تک اُن کا نکاح متعلقہ دفتر میں درج نہیں کروایا گیا۔ پولیس تھانہ ونیکے تارڑکا کہنا ہے کہ اُنہیں اس بارے کوئی بھی معلومات نہیں تاہم تحقیقات جاری ہے۔
بچی کا نکاح