چینلز کو غیرذمہ دارانہ رپورٹنگ سے اجتناب کرنا چاہئے : قائمہ کمیٹی اطلاعات

اسلام آباد (وقائع نگار خصوصی) سینٹ کی مجلس قائمہ برائے اطلاعات و نشریات نے بعض نجی ٹی وی چینلز پر عدلیہ اور سیاستدانوں کے بارے میں حقائق کے منافی خبریں ٹیلی کاسٹ کرنے کی شدید مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ٹی وی چینلز کو غیر ذمہ دارانہ رپورٹنگ سے اجتناب کرنا چاہئے، پاکستان کیبل آپریٹرز ایسوسی ایشنز کو ہدایت کی گئی ہے کہ ایسے پروگرام دکھائے جائیں جو اہل خانہ کے ساتھ بیٹھ کر دیکھے جا سکیں۔نجی ٹی وی چینلز کو سرکاری اداروں سے براہ راست اشتہارات کی فراہمی پالیسی کی خلاف ورزی ہے ۔ وزارت اطلاعات کو اس معاملے کا نوٹس لینا چاہئے جبکہ سیکرٹری اطلاعات منصور سہیل نے کہاکہ غیرذمہ دارانہ رپورٹنگ ملک و قوم اور اداروں کے اپنے مفاد میں بھی نہیں ہے۔ وزارت اطلاعات اس سلسلے کو روکنے کیلئے پارلیمنٹ اور دیگر فریقین سے مل کر کوئی لائحہ عمل مرتب کرے گی۔ کمیٹی کا اجلاس جمعہ کو پارلیمنٹ ہاﺅس میں کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر حاجی غلام علی زیر صدارت ہوا۔ ایم ڈی اے پی پی محمد ریاض خان نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہاکہ اے پی پی ادارے میں منظور شدہ ایڈیٹوریل سٹاف کی تعداد 209ہے اور 85 ملازمین بحال کئے گئے ہیں۔ زاہد خان نے کہاکہ بحال ہونے والوں میں جعلی ڈگریوں والے بھی لوگ ہیں۔ ایم ڈی نے کہا کہ ہم باقاعدہ اسناد کی تصدیق کراتے ہیں۔