سانحہ مارگلہ، ائر بلیو انتظامیہ جاں بحق ہونیوالوں کے ورثا کو جلد معاوضہ دے: قائمہ کمیٹی

اسلام آباد (آن لائن) وفاقی دارالحکومت میں چند ماہ قبل تباہ ہونے والے نجی ایئر لائن کے طیارے کی تحقیقاتی رپورٹ ابھی تک مکمل نہیں ہوسکی جس پر قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع نے اظہار برہمی کرتے ہوئے رپورٹ جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے جبکہ ایئر بلیو انتظامیہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ سانحہ مارگلہ میں جاں بحق ورثاءکو معاوضہ اورانشورنس کی رقم جلد ادا کرے ۔ اجلاس میں انکشاف کیا گیا کہ وزیراعظم نے ہر جاں بحق مسافر کے لواحقین کیلئے جس پانچ لاکھ امداد کا اعلان کیا تھا وہ بھی ابھی تک نہیں مل سکی۔ پی آئی اے بلڈنگ میں گذشتہ روز چیئرپرسن ڈاکٹر عذرا فضل کی سربراہی میں منعقدہ اجلاس میں محکمہ موسمیات کی کارکردگی ، ایئر بلیو کو پیش آنے والے حادثہ اور ڈیفنس ہاﺅسنگ سوسائٹی سے متعلق معاملات زیر غور آئے۔ سیکرٹری دفاع لفٹیننٹ جنرل (ر) اطہر علی کی طرف سے بتایا گیا کہ نجی فضائی کمپنی کے طیارے کی تحقیقات مکمل کرنے میں مزید چھ ماہ سے ایک سال لگ سکتا ہے، جہاز کا ملبہ بے نظیر انٹرنیشنل ایئرپورٹ اسلام آباد منتقل کردیا گیا ہے 19لوگ ایسے ہیں جن کی ابھی تک شناخت نہیں ہوسکی۔ اجلاس کو محکمہ موسمیات کی طرف سے بتایا گیا کہ دنیا میں ابھی تک کوئی ایسا نظام یا آلہ ایجاد نہیں ہوا جو زلزلے کی پیشنگوئی کرسکے۔