قرض کی بروقت ادائیگی پر آئی ایم ایف کی پاکستان کی تعریف

قرض کی بروقت ادائیگی پر آئی ایم ایف کی پاکستان کی تعریف

اسلام آباد (این این آئی) آئی ایم ایف کا وفد آئندہ ماہ پاکستان آئےگا جس میں موجودہ پروگرام کی ادائیگی چند ماہ کےلئے م¶خر کرنے یا نیا پروگرام لینے پر بات چیت ہو گی۔ وزارت خزانہ کے حکام نے نجی ٹی وی کو بتایاکہ زرمبادلہ کے ذخائر بہتر بنانے کے لئے تھری جی سپیکٹرم آکشن بھی اہمیت کا حامل ہے کیونکہ اس نیلامی سے ایک ارب ڈالر سے زائد آنے کی توقع ہے۔ وزیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ زرمبادلہ کی صورت حال پریشان کن ضرور ہے لیکن اس پر قابو پا لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ سے دو سے تین ہفتوں کے اندر 60 کروڑ ڈالر مل جائیں گے۔ دریں اثناءآئی ایم ایف نے پاکستان کی جانب سے قرض کی بروقت ادائیگی کی تعریف کی ہے جبکہ بنک کے ترجمان نے کہا ہے کہ قرضے ری شیڈول کرنے کے حوالے سے کوئی درخواست موصول نہیں ہوئی۔ علامیہ میں کہا گیا ہے کہ سٹیٹ بنک آف پاکستان کو مانیٹری پالیسی مرتب کرتے وقت مہنگائی اور بیرونی معاشی خطرات کو مدنظر رکھنا چاہئے۔