ایوان اقبال اور اقبال اکیڈمی کو منسلک کرنے کا معاملہ، اٹارنی جنرل کی طلبی

اسلام آباد(نمائندہ نوائے وقت)سپریم کورٹ میںایوان اقبال اور اقبال اکیڈمی کو باہم منسلک کرنے سے متعلق عدم قانون سازی کے حوالے سے مقدمہ کی سماعت میں عدالت نے اٹارنی جنرل کو آئندہ سماعت پروضاحت کیلئے طلب کرتے ہوئے سماعت 21اکتوبر تک ملتوی کردی۔ جسٹس ناصر الملک اور جسٹس اعجاز افضل خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے علامہ اقبالؒ کے صاحبزادے جاوید اقبال کی ایوان اقبال اور اقبال اکیڈمی کو منسلک کرنے سے متعلق مقدمہ کی سماعت کی تو ڈپٹی اٹارنی جنرل ساجد الےاس بھٹی نے عدالت کو بتاےا کہ معاملے پر ایگزیکٹو کمیٹی بنائی گئی ہے جو اس کے قانونی اور مالی امور چلانے کا جائزہ لے رہی ہے سابقہ دور حکومت ختم ہونے کے بعد یہ کمیٹی دوبارہ جائزہ لیکر سفارشارت مرتب کریگی جس کے مطابق قانون سازی کی جائیگی۔ جسٹس ناصر الملک نے کہا کہ کسی بھی حکومت کے ختم ہونے کے بعد اس کی کابینہ کے پاس کئے گئے بل ختم نہیں ہوتے اب تو یہ بل پارلیمنٹ سے منظور ہونا باقی ہے اس پر دوبارہ قانون سازی کی ضرورت نہیں ہوتی۔ عدالتی استفسار پر ڈپٹی اٹارنی جنرل ساجد الےاس بھٹی نے بتاےا کہ اٹارنی جنرل یسر اے ملک کراچی گئے ہوئے ہیں جس پر عدالت نے وضاحت کیلئے انہیں آئندہ سماعت پر پیش ہونے کا حکم دیا۔واضح رہے اقبال کی تعلیمات کے فروغ اور ان سے استفادہ کیلئے ایوان اقبال اور اقبال اکیڈمی کو ایکٹ 1951 کے تحت بنایا گیا اقبال آرڈیننس xxxvi of 1962 کے تحت نافذ کیا گیا جبکہ اقبال آرڈیننس 2007 (فروری) میں کابینہ سے منظور ہونے کے بعد سے پارلیمنٹ میں پیش نہیں کیا جاسکا۔