اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایم ڈی نیسپاک کو کام کرنے سے روک دیا

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ) اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایم ڈی نیسپاک کو کام کرنے سے روک دیا ہے۔ ایم ڈی نیسپاک کی تقرری کو وسیم الحسن انصاری نے چیلنج کیا تھا۔ جس پر جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے کام سے روکنے کا حکم جاری کیا۔ درخواست گزار کے مطابق ایک آرکیٹیکٹ کی بطور ایم ڈی نیسپاک تقرری پاکستان انجینئرنگ کونسل ایکٹ کی خلاف ورزی ہے۔ ایکٹ کے تحت صرف انجینئر ہی انجینئرنگ ادارے کا سربراہ بن سکتا ہے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے دوران سماعت ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ بظاہر یہ سیاسی تقرری معلوم ہوتی ہے۔