بھارت افغانستان میں ترقیاتی کاموں کیلئے موجود ہے تو پاکستان کو خوش ہونا چاہئے : کرزئی کی منطق

اسلام آباد (ثناءنیوز ) افغانستان کے صدر حامد کرزئی نے کہا ہے کہ پاکستانی قےادت اور عوام کا افغانستان میں امن و استحکام کے قےام کے لےے تعاون قابل ستائش ہے۔ پاک افغان تعلقات مےں اختلافات کے ذمہ دار پروےز مشرف تھے لےکن پےپلز پارٹی کے اقتدار مےں آنے کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات مےں بہتری آئی۔ بھارت کا افغانستان مےں موجودگی کے حوالے سے اےک سوال کے جواب مےں ان کا کہنا تھا کہ اگر بھارت افغانستان مےں ترقےاتی کاموں کے لےے موجود ہے تو اس پر پاکستان کو خوش ہونا چاہےے۔ سرکاری ٹی وی کو انٹر وےو دےتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزےراعظم ےوسف رضا گےلانی کی جانب سے کابل کے حالےہ دورے کے سوال کے جواب مےں حامد کرزئی کا کہنا تھا کہ وزےر اعظم کا دورہ انتہائی اہمےت کا حامل تھا۔ دونوں ممالک نے مشترکہ امن کمشن کے قےام پر اتفاق بھی کےا۔ پاکستان اور افغانستان تجارتی اور اقتصادی حوالے سے تعاون فراہم کرسکتے ہےں۔ اےک سوال کے جواب مےں ان کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان کا بھائی ہے۔ دونوں ممالک باہمی تعلقات سے بہت سے فائدے حاصل کرسکتے ہےں۔ افغانستان مےں بھارت کی موجودگی سے پاکستان کو کسی طرح نقصان نہےں ہوگا اور نہ ہی پاکستان کو نقصان پہنچانے کیلئے افغانستان کو استعمال کےا جاسکتا ہے۔
کرزئی/ منطق