آرمی چیف این ایل سی کرپشن سکینڈل کی تحقیقاتی رپورٹ 30 جون تک پیش کریں : پی اے سی

اسلام آباد (خبرنگار خصوصی + ریڈیو نیوز + وقت نیوز + ایجنسیاں) پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی (پی اے سی) نے آرمی چیف جنرل کیانی سے این ایل سی کرپشن کی تحقیقاتی رپورٹ 30 جون تک طلب کر لی، سیکرٹری دفاع اطہر علی نے کمیٹی کو بتایا کہ وہ کمیٹی کا پیغام آرمی چیف تک پہنچا دینگے۔ پی آئی اے میں618 افراد کی غیر قانونی بھرتی کا ذمہ دار سابق ایم ڈی پی آئی اے طارق کرمانی سمیت 6 افسران کو ٹھہرایا گیا ہے،نئے بے نظیر انٹرنیشنل ائر پورٹ کے لئے342 کینال اراضی کی خریداری میں14 کروڑ روپے کا سکینڈل سامنے آگیا، گزشتہ روز قائم مقام چیئرپرسن یاسمین رحمن کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاﺅس میں منعقدہ کمیٹی کے اجلاس میں وزارت دفاع کی آڈٹ رپورٹ 2007-08 کا جائزہ لیا گیا ، ارکان نے کہا کہ کرپشن کو ہر شعبے میں روکا جائیگا‘ کرپشن اور اختیارات کے ناجائز استعمال کی وجہ سے ملک کی معاشی حالت خراب ہو چکی ہے۔ کمیٹی رکن زاہد حامد نے پی اے سی کے چیئرمین چوہدری نثار علی خان کا پیغام اجلاس کو سنایا جس میں چیئرمین نے کہا کہ آرمی چیف کیانی سے این ایل سی سکینڈل کی رپورٹ کے حوالے سے بات ہوئے 7 ماہ کا عرصہ گزر چکا ہے، ایم ڈی پی آئی اے ندیم یوسف زرئی نے بتایا کہ 31 مارچ تک خسارہ96 ارب تک پہنچ گیا ہے ،کمیٹی نے پی آئی اے کی مجموعی کارکردگی پر شدید تحفظات کا اظہار کیا اور پی آئی اے کی سروس کی بہتری کے لئے67 کروڑ کی لاگت سے سنگا پور کمپنی سے معاہدے کو بلا ضرورت قرار دیتے ہوئے ذمہ داران کا تعین کر کے ایک ماہ میں رپورٹ طلب کر لی جبکہ پی آئی اے کارگو کو نجی کمپنی کی جانب سے 12 کروڑ74 لاکھ کے بوگس چیکوں میں ملوث گرفتار کمپنی کے چیئرمین کے خلاف مقدمے کی صحیح پیروی کرنے کی ہدایت کی، ندیم یوسف زئی نے بتایا کہ 2009 ءمیں پی آئی اے کا نقصان 12.4 ارب تھا جو2010 میں کم ہو کر8.5 ارب رہ چکا ہے، پی آئی اے کو 28 سالوں سے اپنے پاﺅں پر کھڑا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، ٹریول ایسوسی ایشن پاکستان کراچی آفس سے ویزے لگے پانچ ہزار پاسپورٹ چوری ہوئے۔
پی اے سی