بھٹو ریفرنس: سپریم کورٹ کے باہر پیپلز پارٹی کے وزرا اور ارکان پارلیمنٹ کے نعرے

اسلام آباد (خبرنگار) سپریم کورٹ میں پیپلز پارٹی کے بانی اور سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کا قتل کیس ری اوپن کرنے کے لئے دائر ریفرنس کی سماعت کے موقع پر پیپلز پارٹی کے وزراءاور ارکان پارلیمنٹ نے سپریم کورٹ کے احاطہ سے باہر کار پارکنگ میں زبردست نعرے لگائے جیالوں کی بڑی تعداد موجود تھی جیالوں کے جئے بھٹو، عدلیہ سے سیاہ دھبے اتارو، بھٹو کو پھانسی عدالتی قتل تسلیم کرو اور زندہ ہے بھٹو زندہ ہے کے نعرے گونجتے رہے۔ نعرہ لگانے والوں میں وفاقی وزیر قانون بابر اعوان، وزیراعلیٰ گلگت بلتستان سید مہدی شاہ سمیت کئی وفاقی وزراءکے علاوہ پیپلز پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات قمر زمان کائرہ، سینٹ میں قائد ایوان سینیٹر نیئر بخاری، شازیہ مری، راجہ ریاض، خیبر پی کے کے سینئر وزیر رحیم داد خان نے کسی پروٹوکول کی پرواہ کئے بغیر نعرے بازی میں حصہ لیا۔ اس موقع پر سکیورٹی کے انتہائی انتظامات کئے گئے تھے پولیس کی بھاری نفری نے سپریم کورٹ کو گھیرے میں لے رکھا تھا۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے سینٹ میں قائدایوان نیئر بخاری نے کہا ہے کہ پی پی پی نے عدالتی ریکارڈ کو درست کرنے کیلئے ریفرنس دائر کیا ہے پوری قوم آگاہ ہے کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو کو غلط سزا دی گئی، آج عدلیہ آزاد ہے اور ہمیں ریکارڈ کو درست کرنے کا موقع ملا ہے جس کے اچھے نتائج برآمد ہوں گے۔ یہ عدالتی تاریخ کا بڑا اور اہم ترین کیس ہے جس میں بابر اعوان پیروی کریں گے۔ انہوں نے وزارت سے استعفیٰ دیدیا ہے تاہم اگر بعد میں ضرورت پڑی تو یہ ذمہ داری کسی اور کو بھی دے سکتے ہیں۔ کیس چلے گا دلائل سامنے آئیں گے تو پتہ چلے گا۔ توقع ہے کہ اس ریفرنس سے عدالتی ریکارڈ درست کرنے کا موقع ملے گا۔
نعرے