پاکستان افغانستان میں امن چاہتا ہے‘ نمل میں امریکی پالیسی پر سیمینار

اسلام آباد(نا مہ نگار)نیشنل یونیورسٹی آف ماڈرن لینگوئجز (نمل) کے شعبہ انٹر نیشنل ریلیشنز کے زیر اہتمام "ٹرمپ دور میں امریکہ کی پاکستان ،افغان پالیسی"پر سیمینا ر کا انعقاد کیا گیا ،جس میں سابق ڈیفنس سیکرٹری لیفٹیننٹ جنرل (ر) نعیم خالد لودھی،ایسوسی ایٹ پروفیسر قائد اعظم یونیورسٹی ڈاکٹر ظفر نواز جسپال اور اسسٹنٹ پروفیسر قائد اعظم یونیورسٹی ڈاکٹر مجیب افضل نے بطور گیسٹ اسپیکر شرکت کی، اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل نمل بریگیڈئیر محمد ابراہیم، رجسٹرار نمل، ڈین سوشل سائنسز ،صدر شعبہ، فیکلٹی اور طلباءکی کثیر تعداد بھی موجود تھی۔اس موقع پر شرکاءاسپیکرز کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان میں امن چاہتا ہے کیونکہ پُر امن افغانستان کی پُر امن پاکستان کی ضمانت ہے، امریکہ دھمکیا ں دینے کی بجائے پاکستان کی وار آن ٹیرر پر قربانیوں کو سراہے ،حکومت کو چاہئے کہ امریکہ سے ٹھوس اور مدلل بات کی جائے اور پاک چین اقتصادی راہداری پر امریکہ کو واضح کیا جائے کہ یہ صرف علاقائی ترقی اور معیشت کی بہتری کیلئے ہے سیکیورٹی کے ساتھ اس کا تعلق نہیں اور نا ہی پاکستان چین کو اپنی سر زمین دے گا،شرکاءنے امریکہ کے ساتھ تعلقات کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ روس چین بلاک کی طرف پیش قدمی کو وقت کی ضرورت قرار دیا اور تجاویز پیش کیں کہ اس ضمن میں ترکی اور ایران کو بھی شامل کیا جائے تا کہ پاکستان کی معیشت اور دفاع کو مزید بہتر بنایا جا سکے۔