عالمی صحت کی اسلام آباد میں کانفرنس سے پاکستان کیخلاف منفی پراپیگنڈے کا تدارک ہوا

اسلام آباد(خصوصی نمائندہ)وفاقی وزیر قومی صحت سائرہ افضل تارڈ نے کہا ہے کہ عالمی ادارہ صحت کی رےجنل کمےٹی برائے مشرقی بحےرہ روم کی اسلام آباد مےں کانفرنس کے انعقاد سے دنےا بھر مےں پاکستان کے خلاف منفی پراپےگنڈا کا تدارک ہوا ہے اور اس کانفرنس کے ذرےعے دنےا بھر مےں پاکستان کا سافٹ امےج کو اجاگر کرنے کرنے مےں کافی مدد ملی ہے ۔ وفاقی وزےر صحت نے عالمی ادارہ صحت کی رےجنل کمےٹی برائے مشرقی
بحےرہ روم کی تےن روزہ کانفرنس کے اختتامی سےشن کے بعد پرےس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ےہ کانفرنس اس حوالے سے بھی انتہائی اہمےت کی حامل ہے کےونکہ اس مےں 21 ممالک کے وزراءصحت اور کانفرنس مےں شرےک ممالک کی اعلی قےادت نے شرکت کی ہے۔ اس کانفرنس کے ذرےعے ملک کے بارے مےں مثبت تاثر کو بےن الاقوامی سطح پر اجاگر کرنے مےں کافی مدد ملی ہے۔ کانفرنس مےں موجود شرکاءکے پاکستان کے حوالے سے تاثرات تبدےل ہو چکے ہےں۔ وفاقی وزےر نے بتاےا کہ اس رےجنل کانفرنس کے انعقاد کے حوالے سے فراہم کردہ سہولےات کو اس خطے مےں جو کہ جنوبی اےشےا مےں پاکستان اور افغانستان سمےت مشرق وسطی اور شمالی افرےقہ تک پھےلا ہوا ہے خوب سراہا جا رہا ہے اور پاکستان کو اس رےجنل کمےٹی کے اجلاس کی سربراہی کے لےے منتخب کےا گےا تھا جو کہ ملک کے لےے بڑے اعزاز کی بات ہے۔ اس اجلاس مےں امور صحت کے حوالے سے پاکستان نے گذشتہ چار سالوں کے دوران اٹھائے گئے اہم اقدامات کی تفصےلات سے متعلق شرکاءکو آگاہ کےا۔ وفاقی وزےر کا کہنا تھا کہ سماجی تحفظ کے سےشن مےں پاکستان نے وزےر اعظم کے قومی صحت پروگرام کے حوالے سے دستاوےزی معلومات اجلاس مےں پےش کےں جس مےں غربت کی لکےر سے نےچے بسنے والے غرےب ترےن افراد کے لےے صحت کی بہترےن سہولےات کی فراہمی کے حوالے سے شرکاءکو آگاہ کےا گےا۔