پاکستان اور چین کا ہائبرڈ سیڈ چاول کی پیداوار کیلئے مشترکہ طور پر کام کرنیکا فیصلہ

اسلام آباد ( نامہ نگار) پاکستان اور چائنہ نے ہائبرڈ سیڈ چاول کی پیداوار کے لئے مشترکہ طور پر کام کر نے کا فیصلہ کیا ہے تا کہ دونوں ممالک مل کر اپنی برآمدات بڑھا سکیں۔ اس سلسلے میں پاکستان زرعی تحقیقاتی کونسل کے تحقیقاتی سنٹر ©" قومی زرعی تحقیقاتی مرکز "اسلام آباد میں ©" ہائبرڈ رائس ٹریننگ کورس 2017 " کی اختتامی تقریب کا اہتمام کیا گیا ۔چاول کے بیج چائنیز تحقیق دانوں کی جانب سے پیش کیے گئے۔ اس سلسلے میں ملک کے چاروں صوبوں بشمول خیبر پختونخواہ ، پنجاب، سندھ اور بلوچستان میں ایک سفری سیمینار بھی منعقد کیا گیا۔ اس کا مقصد پاکستان میں زمین کے اعتبار سے چاول کے ہائبرڈ بیج کو جانچنا اور اس سیمینار کے توسط سے چاول کے ہائبرڈ بیج کی ورائٹیز کو بھی پیش کرنا تھا۔ چائنہ کے ماہرین کا ایک وفد بھی اس سیمینار کے موقع پر شامل تھا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سکندر حیات بوسن، وفاقی وزیر برائے قومی تحفظ خوراک و تحقیق نے کہا کہ چاول کی نئی ورائٹی سے ملک کے کسانوں کے لیے فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ہو گا اور پاکستان دوسرے ممالک کو زیادہ چاول بر آمد کرنے کے قابل ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ بیج کی اعلی قسم فصل کی زیادہ پیداوار کی ضامن ہے۔ ڈاکٹرلوئی شی جی ، سیکریٹری چائنہ ایمبیسی نے اس موقع پر خطاب کر تے ہے کہا چین پاکستان میں ہائبرڈ سیڈ چاول کے ذریعے چاول کی پیداوار بڑھانے میں ہرممکن تعاون کر رہا ہے تا کہ پاکستان میں زرعی سیکٹر کی بہتر نشونما ہو سکے۔