برسلز‘ مہاجرین‘ پناہ گزینوں سے متعلق پاکستان کو درپیش مسائل کا اعتراف

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) یورپی یونین نے تسلیم کیا ہے کہ مہاجرین اور پناہ گزینوں کو پناہ دینے والے دوسرے بڑے ملک کی حیثیت سے پاکستان کو شدید مسائل درپیش ہیں جبکہ پاکستان نے افغان مہاجرین کی بروقت واپسی کیلئے عالمی تعاون کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ دفتر خارجہ کے مطابق برسلز میں یورپی یونین اور پاکستان کے مشترکہ کمیشن کے آٹھویں اجلاس میں مذکورہ امور سمیت باہمی دلچسپی کے دیگر معاملات پر بات چیت کی گئی۔ اجلاس میں سیکرٹری اقتصادی امور ڈویژن عارف احمد خان نے پاکستان کی نمائندگی کی۔ طرفین نے یورپین یونین اور پاکستان کے درمیان پانچ برسوں پر محیط ” انگیجمنٹ پلان“ پر عملدرآمد کو سراہتے ہوئے سٹرٹیجک انگیجمنٹ پلان (ایس ای پی) کے ذریعے دوطرفہ تعلقات کو مزید فروغ دینے کا عزم کیا۔ اجلاس میں امن و سلامتی، مائیگریشن، تجارت، انسانی حقوق اور ترقیاتی تعاون کے شعبوں میں پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔یورپی یونین نے پاکستان میں جمہوری اداروں انتخابی اصلاحات ،قانون کی حکمرانی، انسانی حقوق ،معاشی ترقی اور غربت کے خاتمے کے لئے اپنے بھرپور تعاون کا اعادہ کیا۔ یورپی یونین نے پناہ گزینوں کی میزبانی کرنے والا دوسرا بڑا ملک ہونے کی حیثیت سے پاکستان کو در پیش مسائل کا بھی اعتراف کیا۔ طرفین نے اگلے ماہ اسلام آباد میں منعقدہ تخفیف اسلحہ، عدم پھیلاو¿ انسداد دہشت گردی سے متعلق اجلاس کا خیرمقدم اور ان شعبوں میں تعاون جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔ اس کے علاوہ متبادل توانائی کے شعبہ میں تعاون تیز کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا۔ اجلاس کے دوران سائنس و ٹیکنالوجی، ہائیر ایجوکیشن اور ثقافت کے شعبوں میں تعاون کے امور زیر بحث لائے گئے۔ پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی تیزی سے بگڑتی ہوئی صورتحال کو اجاگر کیا اور اس پر گہرے تحفظات کا اظہار کیا۔