کشمیر کی صورتحال پرتشویش :پاکستان بھارت مذاکرات سے مسائل حل کریں:یورپی یونین

کشمیر کی صورتحال پرتشویش :پاکستان بھارت مذاکرات سے مسائل حل کریں:یورپی یونین

اسلام آباد+ بر سلز + سر ینگر (سٹاف رپورٹر + نیوز ایجنسیاں) یورپی یونین نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر اظہار تشویش کرتے ہوئے پاکستان بھارت پر دوطرفہ مسائل کو مذاکرات اور بات سے حل کرنے پر زور دیا ہے۔ یورپی یونین نے تسلیم کیا مہاجرین اور پناہ گزینوں کو پناہ دینے والے دوسرے بڑے ملک کی حیثیت سے پاکستان کو شدید مسائل درپیش ہیں جبکہ پاکستان نے کہاافغان مہاجرین کی بروقت واپسی کیلئے عالمی تعاون کی ضرورت ہے۔ دفتر خارجہ کے مطابق برسلز میں یورپی یونین اور پاکستان کے مشترکہ کمشن کے آٹھویں اجلاس میں مذکورہ امور سمیت باہمی دلچسپی کے دیگر معاملات پر بات چیت کی گئی۔ سیکرٹری اقتصادی امور ڈویژن عارف احمد خان نے پاکستان کی نمائندگی کی۔ پانچ برسوں پر محیط ’’ انگیجمنٹ پلان‘‘ پر عملدرآمد کو سراہتے ہوئے سٹرٹیجک انگیجمنٹ پلان (ایس ای پی) کے ذریعے دوطرفہ تعلقات کو مزید فروغ دینے کا عزم کیا۔ امن و سلامتی، مائیگریشن، تجارت، انسانی حقوق اور ترقیاتی تعاون کے شعبوں میں پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔یورپی یونین نے پاکستان میں جمہوری اداروں انتخابی اصلاحات ،قانون کی حکمرانی، انسانی حقوق ،معاشی ترقی اور غربت کے خاتمے کے لئے اپنے بھرپور تعاون کا اعادہ کیا۔ طرفین نے اگلے ماہ اسلام آباد میں منعقدہ تخفیف اسلحہ، عدم پھیلاؤ انسداد دہشت گردی سے متعلق اجلاس کا خیرمقدم اور ان شعبوں میں تعاون جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔ متبادل توانائی کے شعبہ میں تعاون تیز کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا۔ سائنس وٹیکنالوجی، ہائیر ایجوکیشن اور ثقافت کے شعبوں میں تعاون کے امور زیر بحث لائے گئے۔ پاکستانی وفد نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی تیزی سے بگڑتی ہوئی صورتحال کو اجاگر اور اس پر گہرے تحفظات کا اظہار کیا۔ادھر مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں شہری ہلاکتیں اور خواتین کے بال کاٹنے کا سلسلہ ایک ساتھ جاری ہے جبکہ عوام سراپا احتجاج ہیں ،بھارتی فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں بیسیوں افراد زخمی ہوگئے ۔حاجن میں شہید ہونے والے تین نوجوان احتجاج کے سائے میں سپرد خاک،وادی میں کشیدگی عروج پر،کاروباری مراکز اور تعلیمی ادارے بند،موبائل اور انٹرنیٹ سروس معطل،سادہ لباس فوجیوں نے مزید 3خواتین کے بال کاٹ ڈالے،حریت قیادت کی اپیل پر وادی میں ہمہ گیر ہڑتال اوراحتجاج کا اعلان کردیا گیا۔ شہداء کی تدفین کے بعد لوگوں نے زبردست احتجاج کیا اور قابض فورسز نہ صرف آنسو گیس اور لاٹھی چارج کیا بلکہ لوگوں کو منتشر کرنے کیلئے فائرنگ بھی کی جس کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں ۔ حریت کانفرنس(گ) کے چیئرمین علی گیلانی کوایک نجی ہسپتال میں داخل کیاگیا ہے۔ ادھر 6روز تک ہسپتال میں زیرعلاج رہنے کے بعدنعیم خان کودین دیال ہسپتال دہلی سے واپس تہاڑجیل منتقل کیاگیا۔ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے 7 رہنماوں کو سنٹرل جیل سری نگر سے رہائی کے فوراً بعد دوبارہ گرفتار کر لیا گیا ہے۔ کشمیری خواتین کی تنظیم دختران ملت کی سربراہ آسیہ اندرابی بھارت کی سرکردہ خواتین اندرا گاندھی،کرن بیدی،لتا منگیشکر،محبوبہ مفتی کی صف میں شامل ہو گئی ہیں۔سرکاری طور پر جاری ہونے والے ایک اشتہار میں اندرا گاندھی،کرن بیدی،لتا منگیشکر،محبوبہ مفتی کے ساتھ آسیہ اندرابی کی تصویر بھی لگائی گئی ہے۔یہ اشتہار بھارتی وزیراعظم مودی کی طرف سے بیٹی بچائو منصوبہ کی اشتہاری مہم کا حصہ ہے۔ کٹھ پتلی انتظامیہ نے مظاہرے روکنے کیلئے آج سکولوں کو بند کرنے کا اعلان کردیا ہے۔