اجی ایس پی کا درجہ بحال ہونے پر اشیاء کی فہرست امریکہ کو دینگے: وزیر تجارت

سلام آباد (نمائندہ خصوصی) وفاقی وزیر تجارت خرم دستگیر خان نے کہا ہے کہ امریکہ کی طرف سے پاکستان کے لئے جی ایس پی کا درجہ بحال ہونے کے بعد رعایتی ٹیرف کے لئے اشیاء کی فہرست امریکہ کے حوالے کی جائے گی۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان امریکہ بزنس مواقع کانفرنس اور امریکی وزیر تجارت کے دورہ پاکستان کے دوران دونوں ممالک میں تجارتی پارٹنر شپ پر بات چیت ہوئی۔ پاکستان امریکہ ٹریڈ سرمایہ کاری ایگریمنٹ فریم ورک کو ہوئے 12 سال ہو چکے ہیں۔ امریکہ کے ساتھ حقیقت پر مبنی تعلقات ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ کے بعد امریکہ نے پاکستان کو تجارتی مراعات نہیں دیں‘ تاہم یہ مطالبہ سامنے رکھ کر کشیدگی پیدا نہیں کر سکتے۔ امریکی کانگرس نے 19 ماہ گزرنے کے بعد بھی اب تک جی ایس پی سکیم کی منظوری نہیں دی ہے ایسے شواہد ہیں کہ چند ماہ میں جی ایس پی سکیم بحال ہو جائے گی۔ امریکہ کے ساتھ 5.3 بلین ڈالر کی تجارت ہے جس کا توازن پاکستان کے حق میں ہے۔ امریکہ 1.7 ٹریلین ڈالر کی سرکاری خریداری کرتا ہے۔ ٹینڈر کے عمل میں پاکستانی کمپنیاں شریک نہیں ہو سکتیں۔ اس کے لئے ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن کے پروکیورمنٹ ایگریمنٹ پر دستخط کرنا ضروری ہے۔ پہلے مرحلہ میں ایگریمنٹ میں بطور مبصر شرکت کریں گے اس عمل کو مکمل کیا جائے گا۔ ٹیکسٹائل انڈسٹری میں واضح تبدیلی آئی ہے۔خام کاٹن کے برآمد کی بجائے اب ویلیو ایڈیشن پر توجہ دی جا رہی ہے۔ بزنس کو آسان بنانے اور لاگت میں کمی کے لئے کمیٹی کام کر رہی ہے۔ آئندہ بجٹ میں سرمایہ کاری کے لئے اقدامات ہوں گے۔ بیرون ملک ٹریڈ افسرکی تعیناتی کے لئے جلد اشتہار دیا جائے گا ‘ امریکہ کے دو طرفہ سرمایہ کاری کے ماڈل معاہدہ کا جائزہ لیا ہے۔ اس میں بعض چیزیں ایسی ہیں جو ملک کے لئے خطرناک ہو سکتی ہیں۔ پاکستان اپنا خاکہ تیار کر رہا ہے جس پر امریکہ سے رائے لی جائے گی۔ پاکستان کا وفد جلد روس کا دورہ کرے گا تاہم اس سے قبل روسی ٹیم آئے گی۔ روس کے ایکسپو میں حصہ لیں گے۔ ایکسپو میں 72 ممالک آئے اور 1200 مندوبین نے شرکت کی۔