سانحہ قصور کیخلاف اسلامی یونیورسٹی، وفاقی اردو یونیورسٹی کے طلبہ کی ریلیاں

سانحہ قصور کیخلاف اسلامی یونیورسٹی، وفاقی اردو یونیورسٹی کے طلبہ کی ریلیاں

اسلام آباد(نا مہ نگار)سانحہ قصور کے خلاف بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اور وفاقی اردو یونیورسٹی کے طلباء کی احتجاجی ریلیاں،طلباء کا معصوم زینب کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہ۔مظاہرے کی قیادت اکیڈمک سٹاف ایسوسی ایشن کے رہنما ڈاکٹر حسنین عباس نقوی اور ناظم اسلامی جمعیت طلبہ عبدالمنان شاہ نے کی۔طلبا کی بڑی تعداد نے مظاہرہ میں شرکت کی۔حکومت اور پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی طلبا سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر حسنین نقوی نے کہا کہ اگر حکومت قصور میں ہونے والے اس واقعے کے ذمہ داروں کو قرار واقعی سزا دیتی جسمیں درجنوں بچوں سے زیادتی کی گئی تھی تو آج ہمیں یہ دن نا دیکھنا پڑتا آج زینب کا واقعہ ہوا ہے کل اور بھی ہونگے اس لیے اس کے سدباب کیلئے ایسے درندوں کو فی الفور گرفتار کر کے پھانسی کی سزا دی جائے اس موقع پر عبدالمنان شاہ کا کہنا تھا اس واقعے میں ڈائریکٹ پولیس اور مقامی ایم این اے ملوث ہیں کیونکہ پہلے ہونے والے واقعات کے خلاف کارروائی نا ہونا اس بات کا ثبوت ہے ملزمان کو سرکاری سرپرستی حاصل ہے اس لیے حکومت فی ا لفور ملزمان کو گرفتار کر کے سزا دے وگرنہ دارالحکومت کے طلبا ایوانوں کا گھیرا کریں گے اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات ماجد امیر کا کہنا تھا جب تک زینب کے قاتل گرفتار نہیں کیے جاتے ہم اس وقت تک اپنا احتجاج جاری رکھیں ۔وفاقی اردو یونیورسٹی طلباء طالبات سانحہ قصور کے خلاف زیرو پوائنٹ سے اردو یونیورسٹی تک احتجاجی ریلی نکالی ،ریلی کے شرکاء ہم انصاف چاہتے ہیں ،زینب کے قاتلوں کو پھانسی دو کے نعرے لگا رہے تھے۔طلبا و طالبات نے مطالبہ کیا کہ معصوم زینب کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کرکے پھانسی پر لٹکایا جائے ،ہم زینب کے والدین کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں اور ا ن کے ساتھ کھڑے ہیں۔