عدالیہ مخالف بینر کیس: اصل ملزموں کو کب پکڑیں گے‘ پولیس کو آخری موقع دے رہے ہیں: سپریم کورٹ

اسلام آباد (ایجنسیاں) سپریم کورٹ نے عدلیہ مخالف بینر کیس میں پولیس کی جانب سے ملزمان کیخلاف کارروائی نہ ہونے پر حتمی مہلت دیتے ہوئے آئی جی اسلام آباد اور سیکرٹری داخلہ سے اصل ملزمان کی گرفتاری کے حوالے سے 24ستمبر تک رپورٹ طلب کر لی۔ چیف جسٹس ناصرالملک نے کہا کہ بینرز لگانے کا معاملہ مئی میں پیش آیا اور اب ستمبر شروع ہو گیا‘ پولیس صرف تفتیش ہی کر رہی ہے آخر وہ اصل ملزمان کو کب گرفتار کرے گی‘ پولیس کو آخری موقع دے رہے ہیں ملزمان کو گرفتار کرے۔  آئی جی اسلام آباد کی جانب سے رپورٹ جمع کرائی گئی جس میں عدالت سے حتمی تحقیقات کیلئے دو ہفتے کی مزید مہلت بھی طلب کی گئی۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے بتایا کہ پولیس کی تحقیقات جاری ہے۔ مرکزی ملزم راشد کے موبائل فون کے ڈیٹا کی پڑتال مکمل کرلی ہے جس سے 29 افراد کا اہم ڈیٹا بھی نکلا ہے۔ 17 افراد کے حوالے سے تحقیقات جاری ہے۔ ملزم راشد کا ایک سینئر صحافی سے رابطہ رہا اس دوران اس کے فیڈرل یونین آف جرنلسٹس سے بھی رابطے رہے مگر وہ خود صحافی نہیں ہے۔ درخواست گزار وکلاء نے عدالت سے استدعا  کی کہ پولیس جان بوجھ کر اصل افراد کیخلاف کارروائی نہیں کر رہی، اس نے ابھی تک یہ بھی نہیں بتایا کہ مرکزی ملزم کا کس سینئر صحافی سے رابطہ تھا۔ اتنا عرصہ گزر گیا پولیس کی کارکردگی نہ ہونے کے برابر ہے۔ اس پر جسٹس گلزار نے کہا کہ پولیس کسی اینکر کی رشتہ دار نہیں ہوتی انہیں اصل ملزمان کو سامنے لانا ہوگا۔