اوورسیز پاکستانیوں کو سہولیات کی عدم فراہمی، سپریم کورٹ نے سول ایوی ایشن کی رپورٹ مسترد کردی

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کورٹ نے اوورسیز پاکستانیوں کو ائرپورٹس پر سہولیات کی عدم فراہمی سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی۔ عدالت نے سول ایوی ایشن کی جانب سے پیش کردہ رپورٹ کو مسترد کرتے ہوئے شدید برہمی کا اظہار کیا ہے۔ عدالت نے غفلت برتنے والے متعلقہ افسروں کو آئندہ سماعت پر پیش ہونے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 17 ستمبر تک ملتوی کردی۔ جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں قائم بنچ نے کیس کی سماعت کی تو او پی ایف اور سی اے اے کے وکیل و دیگر عدالت میں پیش ہوئے عدالت کو بتایا گیا کہ اس حوالے سے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ ایک انفارمیشن ڈیسک قائم کیا گیا ہے۔ اس پر جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہا کہ سب کاغذی کارروائی ہے، عملی طور پر حالات پہلے سے بھی بدتر ہوگئے ہیں۔ عدالتی احکامات پر عمل درآمد نہیں کیا گیا۔ سوچا گیا کہ عدالت کو کچھ معلوم نہ ہوگا۔ زرمبادلہ بھیجنے والے تارکین وطن کی تذلیل کی جاتی ہے، رشوت کے بغیر کوئی کام نہیں ہوتا۔ عدالتی حکم پر عدم عملدرآمد کے کون لوگ ذمہ دار ہیں، اس پر کس نے عمل کرنا تھا؟۔