نیپرا نے ایران سے ایک ہزار میگاواٹ بجلی خریدنے کی منظوری دیدی

اسلام آباد (عتیق بلوچ ) نیپرا نے ایران سے ایک ہزار میگاواٹ بجلی خریدنے کی اصولی منظوری دیدی ہے۔ ایران بلوچستان میں ٹرانسمیشن لائن کیلئے 70فیصد فنانسنگ فراہم کرنے پر بھی تیار ہے۔ ایران سے 8 تا11روپے فی یونٹ پر بجلی خریدی جائے گی۔ نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی کی درخواست پر سماعت چئیرمین نیپرا طارق سدوزئی کی سربراہی میں منعقد ہوئی۔ سماعت کے دوران ڈپٹی جنرل منیجر فنانس این ٹی ڈی سی نے بتایا کہ ایرانی کمپنی طاوانیر زاہدان میں 1ہزار300 میگاواٹ صلاحیت کا پاور پلانٹ لگائے گی جس سے پیدا ہونے والی بجلی 500کے وی ایچ وی ڈی سی بائی پولر ٹرانسمیشن لائن سسٹم کے ذریعے کوئٹہ میں نیشنل گرڈ میں شامل کی جائے گی۔ اس نوعیت کی ٹرانسمیشن لائن پہلی مرتبہ پاکستان میں تعمیر کی جائے گی۔ اس ٹرانسمیشن سسٹم کے استعمال سے بجلی کی ترسیل پر اوسط لاسز 2فیصد کم ہوں گے جبکہ ایک لائن کی بندش کی صورت میں دوسری لائن سے بجلی کی بلاتعطل فراہمی جاری رہے گی۔ ایرانی کمپنی طاوانیر 30سال تک بجلی فراہم کرنے کی پابند ہوگی۔ بارڈر سے کوئٹہ تک ٹرانسمیشن لائن کی تعمیر پر58کروڑ ڈالر لاگت آئیگی۔ اتھارٹی کے استفسار پر محمد شبیر نے بتایا کہ ایران کی بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت 70ہزار میگاواٹ ہے۔ ایران ہر سال بجلی کی پیداوار میں 5ہزار میگاواٹ اضافہ کررہا ہے۔