ممبئی حملہ کیس‘ بھارتی گواہوں پر جرح کا ریکارڈ عدالت جمع نہ کرانے پر نوٹس جاری

اسلام آباد (وقائع نگار) اسلام آباد ہائی کورٹ نے ممبئی حملہ کیس میں بھارتی گواہوں کے بیانات اور ان پر جرح کے ریکارڈ کو جوڈیشل کمشن کی جانب سے خود عدالت میں جمع نہ کرانے کے خلاف درخواست پر وفاق کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا ہے ۔ ذکی الرحمان لکھوی کی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ بھارت میں جوڈیشل کمیشن کی کارروائی کو قانون کے مطابق عدالتی ریکارڈ کا حصہ نہیں بنایا گیا۔ ایف آئی اے کی جانب سے ضمانت منسوخی کی درخواست پر سماعت کے دوران وکیل نے اعتراض کیا کہ اجمل قصاب کا بیان ہندی میں ہے جس پر سب سے زیادہ کیس کا انحصار کیا جا رہا ہے ۔ ہمارے قانون کے مطابق کسی ملزم کا ہندی میں اعترافی بیان نہیں لیا جا سکتا۔ ایف آئی اے پراسیکیوٹر نے کہا کہ بیان کا اردو اور انگریزی ترجمہ کروایا گیا اور مترجم کو گواہوں کی فہرست میں شامل کر کے وکلاء نے صفائی کو ان پر جرح کا بھی موقع دیا گیا ۔ کیس کی مزید سماعت 17 مارچ کو ہو گی جبکہ ذکی الرحمان لکھوی کی نظربندی کے خاتمے کی درخواست آج سنی جائے گی۔