پرویز اشرف کالاباغ ڈیم کی تعمیر سے متعلق سوال گول کر گئے

اسلام آباد (خبرنگار خصوصی + ایجنسیاں) وفاقی وزیر پانی و بجلی راجہ پرویز اشرف پریس کانفرنس کے دوران کالاباغ ڈیم کی تعمیر کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کا جواب گول کر گئے اور کہا کہ کالاباغ کی بجائے متاثرین کی امداد کی ضرورت ہے۔ سیلاب سے پیپکو کو چار ارب روپے کا نقصان ہوا، اب تک متاثرین سیلاب کےلئے 9کروڑ 48لاکھ ڈالر کی عالمی امداد موصول ہوئی ہے بجلی انفراسٹرکچر بحالی کےلئے ورلڈ بنک نے امداد کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اسلام آباد مےں نیوز کانفرنس مےں راجہ پرویز اشرف نے بتایا کہ سیلاب کے باعث قادر پور گیس فیلڈ بند ہونے سے بجلی گھروں کو گیس کی سپلائی منقطع ہوگئی ہے جس سے ایک ہزار سے پندرہ سو میگا واٹ بجلی کی پیداوار مےں کمی آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ خیبر پی کے مےں گرڈ سٹیشن اور ٹرانسمیشن لائنز پانی مےں بہہ گئی ہےں جبکہ کینال، چھوٹے ڈیم اور زیر تعمیر ہائیڈرو پاور سٹیشن کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ راجہ پرویز اشرف کا کہنا تھا کہ سیلاب کے باعث پورے ملک مےں تیل کی سپلائی بری طرح متاثر ہوئی ہے، صنعتی سیکٹر سے درخواست کی ہے کہ گیس بجلی کی پیداوار کےلئے دی جائے۔ اس وقت سےلابی رےلہ سکھر اور گدو بےراج سے گزر رہا ہے،ہمارے بےراج محفوظ رہے ہےں،لےکن نہروں کے بند ٹوٹنے سے پانی سے ان علاقوں مےں تباہی ہوئی، ڈی جی محکمہ موسمےات نے بتاےا کہ موسم کی صورتحال آئندہ چند دنوں مےں گھمبےر ہوسکتی ہے، تونسہ بےراج مےں سےلاب کا بڑا رےلہ آسکتا ہے، اس مہےنے ہم الرٹ رہےں گے۔