پاکستان پوسٹ کا سالانہ خسارہ 4ارب سے بڑھ گیا، ذیلی قائمہ کمیٹی میں انکشاف

اسلام آباد (آئی این پی) قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے مواصلات کی ذیلی کمیٹی  کے اجلاس میں انکشاف ہوا ہے کہ پاکستان پوسٹ میں 504ڈیلی ویجز ملازمین گزشتہ پانچ ماہ سے بغیر تنخواہ  کام کر رہے ہیں،  بعض ملازمین  کو صرف 1200روپے ماہوار دیئے جارہے ہیں، بجٹ کی کمی کی وجہ سے میل سروس بند ہے، ٹیلی فون کنکشن عدم ادائیگی پر کٹ چکے ہیں‘  پرنٹنگ کا بل ادا نہ ہونے  پر  ضروری  مٹیریل  تیار نہیں  ہو پارہا، پاکستان پوسٹ کا سالانہ خسارہ چار ارب سے بڑھ  چکا ہے، ذیلی کمیٹی کے کنوینئر عثمان خان ترکئی نے ہدایت کی  ڈیلی ویجز ملازمین کو ریگولر کیا جائے، جماعت اسلامی کے رکن صاحبزادہ طارق اللہ نے کہا کہ پاکستان پوسٹ کی صوبہ خیبر پی کے میں کارکردگی ناقص ہے، گزشتہ دور میں بھرتیوں میں بہت زیادہ گھپلے ہوئے، ذیلی کمیٹی کا نیشنل ٹرانسپورٹ ریسرچ سنٹر کا دورہ کرنے کا فیصلہ۔ بدھ کو قومی اسمبلی کی ذیلی کمیٹی برائے مواصلات کا اجلاس کنوینئر عثمان خان ترکئی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد ہوا، جس میں جوائنٹ سیکرٹری مواصلات آمنہ عمران نے نیشنل ٹرانسپورٹ ریسرچ سنٹر میں بھرتیوں کے حوالے سے بریفنگ دی۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ پانچ سال کے دوران ادارے میں 9 افسران جبکہ 18 ملازمین بھرتی کئے گئے۔ پاکستان پوسٹ آفس ڈیپارٹمنٹ کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل ظفر اللہ خان نے کہا کہ ان کے ادارے میں گزشتہ چھ سال کے دوران 3224 افسران و ملازمین بھرتی کئے گئے۔ اس موقع پر ذیلی کمیٹی کے رکن صاحبزادہ طارق اللہ نے کہا کہ گزشتہ دور حکومت میں پوسٹ آفس ڈیپارٹمنٹ میں بھرتیوں میں بڑے بڑے گھپلے موجود ہیں، اس کی تحقیقات ہونی چاہیے۔