وزیر اعظم نے ارکان پارلیمنٹ کے زیر التواء 92 گیس منصوبوں کی منظوری دے دی

اسلام آباد (ثناء نیوز) وزیر اعظم نے ارکان پارلیمنٹ کے زیر التواء 92 گیس منصوبون کی منظوری دے دی ہے ۔ 10 ارب روپے کی لاگت آئے گی ۔ اوگرا کو اس بارے میں آگاہ کر دیا گیا ہے وزیر اعظم کی اس باضابطہ منظوری سے سینٹ کی قائمہ کمیٹی استحقاق قواعد و ضوابط کو آگاہ کر دیا گیا ہے ۔ کمیٹی میں ڈپٹی کمشنر کراچی جمال قاضی نے قوم پرست سینیٹر لالہ عبدالرئوف کے ساتھ نامناسب رویہ اختیار کرنے پر معذرت کر لی ہے چیئرمین اوگرا نے آئندہ دو روز میں سینیٹر زاہد خان کے گیس منصوبے پر کام شروع کرنے کے لئے سمری وزارت پیٹرولیم کو بجھوانے کی یقین دہانی کروائی ہے ۔ بدھ کو قائمہ کمیٹی کا اجلاس چیئرمین سینیٹر کرنل ( ر ) طاہر حسین مشہدی کی صدارت میں پارلیمنٹ ہائوس میں ہوا تھا۔ اجلاس کی کارروائی کے دوران سیکرٹری پٹرولیم و قدرتی وسائل نے قائمہ کمیٹی کو آگاہ کیا کہ وزیر اعظم نے سی پی 20 کے تحت اراکین پارلیمنٹ کے زیر التواء 92 گیس منصوبوں کی منظوری دے دی ہے ان میں 66 جاری منصوبے ہیں چیئرمین اوگرا نے بتایا کہ گیس منصوبوں کے حوالے سے منظور فنڈز لیپس نہیں ہوئے ۔