میرا کام دستاویزات وصول کر کے سربراہ تحقیقاتی ٹیم کے سپرد کرنا تھا: گواہ مشرف کیس

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت ) پرویز مشرف غداری کیس میں استغاثہ کے ایک اور گواہ خالد رسول نے اپنا بیان قلمبند کرا دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ان کا کام دستاویزات وصول کرنا اور ایف آئی اے تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ کے حوالے کرنے کے سوا کچھ نہیں تھا۔جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں خصوصی عدالت کے تین رکنی بنچ نے پرویز مشرف غداری کیس کی سماعت کی۔استغاثہ گواہ خالد رسول نے بیان ریکارڈ کرایا کہ انہو ں نے چھ دسمبر 2013 کو پی ٹی وی کے پروڈیوسر غالب حسین سے پرویز مشرف کی ایمرجنسی سے متعلق تقریر کی ڈی وی ڈی حاصل کی، تمام دستاویزات وصول کرنے کے بعد ایف آئی اے تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ خالد قریشی کے سپرد کر دیں۔ اکرم شیخ نے کہا کہ وکیل صفائی آج ہی جرح بھی کر لیں اور آئندہ تاریخ کیلئے گواہ خالد قریشی کے سمن جاری کئے جائیں۔ جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ وکیل صفائی آج جرح نہیں کرنا چاہتے تو ٹھیک ہے۔ کیس کی مزید سماعت 5 اگست کو ہو گی۔