تمام وزارتیں اور ڈویژن بچ جانیوالے فنڈز کی واپسی یقینی بنائیں: ذیلی کمیٹی پی اے سی

اسلام آباد (اے پی پی) پبلک اکائونٹس کمیٹی کی ذیلی کمیٹی نے تمام وفاقی وزارتوں اور ڈویژنز کو 15 مئی تک بچ جانے والے تمام فنڈز کی سرکاری خزانے میں واپسی یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔ کمیٹی نے کہا کہ وزارتیں این جی اوز اور ڈونرز سے براہ راست معاہدے کریں نہ ان کو براہ راست رقوم دی جائیں، حکومت تھرمل یونٹ لگانے کی بجائے گلگت بلتستان اور کے پی کے میں دریائے سندھ اور دیگر ذرائع سے بجلی پیدا کرنے کی طرف توجہ دے۔ اجلاس بدھ کو پارلیمنٹ ہائوس میں ذیلی کمیٹی کی کنوینئر شفقت محمود کی زیر صدارت ہوا۔ اجلاس میں وزارت امور کشمیر کے 1998-99ء کے آڈٹ اعتراضات کا جائزہ لیا گیا۔ ایک آڈٹ اعتراض کے جائزہ کے دوران کمیٹی  نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ کئی این جی اوز اور ڈونرز ایسے ہیں جن کا ایجنڈا ہی کچھ اور ہے، ریاست ان کو کنٹرول کرے، وزارتیں، این جی اوز اور ڈونرز سے براہ راست معاہدہ نہ کریں اور ان کو براہ راست پیسہ نہ دیا جائے۔ ہر بات حکومت کے علم میں ہونی چاہئے اور اس حوالے سے طے شدہ طریقہ اختیار کیا جائے۔ سیکرٹری گلگت بلتستان نے  کمیٹی کو بتایا کہ گلگت بلتستان کو سبسڈی پر گندم کی فراہمی سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو نے شروع کی تھی۔ شمالی علاقہ جات ٹرانسپورٹ کمپنی (ناٹکو) کے ذریعے گندم گلگت بلتستان پہنچتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ فرقہ واریت سے متاثرہ اور بدامنی کے شکار علاقوں میں بھی گندم فراہم کی جا رہی ہے۔